Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / این آئی ٹی مسئلہ پر جموں بند

این آئی ٹی مسئلہ پر جموں بند

SRINAGAR, APR 7 (UNI)- Security personnel deployed in and outside the National Institute of Technology in Srinagar on Thursday. UNI PHOTO-67U

طلباء بعد ازاں امتحانات میں حصہ لے سکتے ہیں ، وزارت فروغ انسانی وسائل

نئی دہلی ۔ /7 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) جموں خطہ میں آج عام زندگی مفلوج رہی ۔ این آئی ٹی سرینگر میں بیرونی طلباء پر پولیس کی مبینہ زیادتیوں پر احتجاج کرتے ہوئے بند منایا گیا ۔ جموں و کشمیر نیشنل پنتھرس پارٹی کے بشمول مختلف گروپس نے جموں میں بند کا اعلان کیا تھا ۔ /5 اپریل کو پولیس کی جانب سے بیرونی طلباء پر کئے گئے لاٹھی چارج کے خلاف احتجاج کیا جارہا ہے ۔ جموں صوبائی پیپلز فورم سری رام سینا اور مختلف طلباء تنظیموں نے ایک روزہ جموں بند کی اپیل کی حمایت میں احتجاج کیا ۔ بار اسوسی ایشن کے تحت جموں نے بھی اس خطہ کی تمام عدالتوں میں کام بند کردیا ۔ اسی دوران وزارت فروغ انسانی وسائل نے آج کہا کہ این آئی ٹی سرینگر کے طلباء جہاں تصادم کے باعث کشیدگی پائی جاتی ہے بعد ازاں امتحانات میں شرکت کرسکتے ہیں ۔ یہ فیصلہ وزارت فروغ انسانی وسائل کی سہ رکنی ٹیم کی جانب سے کیمپس کا دورہ کرنے کے بعد کیا گیا ۔ ٹیم نے کیمپس کی صورتحال کا جائزہ لیا اور کشیدگی کم کرنے کے لئے احتجاجی طلباء کے ساتھ بات چیت بھی کی ۔ کیمپس میں وہ کچھ وقت کے لئے گھر جانا چاہتے ہیں اور بعد ازاں امتحان میں شرکت کریں گے ۔ ان کے لئے امتحان دوبارہ منعقد کیا جائے گا ۔ طلباء نے ٹیم کے سامنے کہا کہ پولیس ملازمین کے خلاف کارروائی کی جائے

اور اس ادارہ کو کشمیر سے باہر منتقل کیا جائے گا ۔ وزارت فروغ انسانی وسائل کے عہدیداروں نے کہا کہ کیمپس میں ایسے طلباء بھی ہیں جو بعد ازاں امتحان تحریر کرنا چاہتے ہیں جبکہ طلباء کی اکثریت امتحانات کے انعقاد کے لئے اصرار کررہی ہے ۔ اس لئے انہیں یہ اختیار دیا جارہا ہے کہ جو طلباء امتحان لکھنا چاہتے ہیں انہیں امتحان لکھنے کا موقع دیا جائے گا اور دیگر کے لئے وزارت سے مشاورت کے بعد فیصلہ کیا جائے گا ۔ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی سرینگر میں آج بھی صورتحال کشیدہ دیکھی گئی ۔ بیرونی طلباء کے ایک چھوٹے گروپس نے اس ادارہ کو کشمیر سے منتقل کرنے کا مطالبہ کیا ۔ دیگر ریاستوں کی خواتین طالبات نے کیمپں میں مارچ نکالا ۔ احتجاجی طلباء نے کہا کہ کیمپس میں مارچ نکالا گیا ہے اور کیمپس کے باہر جمع طلباء کے ساتھ زیادتی کی گئی ہے ۔ احتجاجی طلباء نے کیمپس میں مارچ نکالا جس پر ڈائرکٹر جنرل پولیس کے راجندر کمار احتجاجی طلباء سے بات کرنے کے لئے کیمپس پہونچ گئے ہیں ۔ حکومت نے این آئی تصادم کی وقت مقررہ کے اندر تحقیقات کا حکم دیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT