Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / این ڈی اے اقتدار کے بعد ملک میں اقلیتوں و پسماندہ طبقات پر ظلم

این ڈی اے اقتدار کے بعد ملک میں اقلیتوں و پسماندہ طبقات پر ظلم

سیاسی و معاشی بحران ، سیکولر طاقتوں کو متحد ہونے کا مشورہ، ایس سدھاکر ریڈی
حیدرآباد ۔ 20 جولائی (سیاست نیوز) کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے قومی جنرل سکریٹری ایس سدھاکر ریڈی نے قومی سطح پر بڑھتی فسطائیت کی سختی کے ساتھ مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مرکز میں بی جے پی کی زیر قیادت این ڈی اے حکومت کے اقتدار میںآنے کے بعد اقلیتو ں اور پسماندہ طبقات پر مظالم کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے  بڑھتے فسطائیت و سیاسی اور معاشی بحران سے ملک کو چھٹکارہ دلانے کیلئے بائیں بازو ‘ ڈیموکریٹ و سیکولر طاقتیں کا متحد ہونا ضروری ہے ۔ سدھاکر ریڈی حیدرآباد کے سی پی آئی پارٹی ہیڈ کوارٹر مخدوم بھون میں منعقدہ پریس کانفرنس سے مخاطب تھے ۔ انہوں نے کہا کہ سی پی آئی پارٹی نیشنل کونسل کے تین روزہ اجلاس میں اس بات کا فیصلہ لیا گیا ہے کہ سنگھ پریوار جس کو مرکزی حکومت کی مکمل پشت پناہی حاصل ہے کے خلاف ایک منظم نظریاتی تحریک کا آغاز کیاجائے ۔ سدھاکر ریڈی نے بتایاکہ چھ ماہ قبل آندھرا کے ضلع گنٹور میں ایک قومی کونسل کا اجلاس منعقد ہوا تھا اور جاریہ ماہ دہلی میںمنعقدہ قومی کونسل اجلاس میں پیش کی گئی قراردادوں کے مطابق مود ی حکومت امریکہ اور اسرائیل کی گود میں بیٹھ کر ہندوستان کی معاشی پالیسیاں طئے کر رہی ہے جبکہ بیرونی سرمایہ کاری کے نام پر کارپوریٹ اداروں کو فائدہ پہنچایا حکومت ہند کی تعلیم کو خانگیانہ اور زعفرانی بنانے کی کوشش کو بھی اپنی شدید تنقیدکا نشانہ بنایاہے ۔ انہوں نے تعلیمی اداروں میں سنگھ پریوار کے لوگو ں کی بڑھتی اجارہ داری کوعام ہندوستان کے حقوق کے لئے نقصاندہ قرار دیا ۔ عظیم ہندوستان کے جمہوری نظام کی حفاظت کیلئے تمام سکیولر اور ڈیموکرٹیک فرنٹس کے اتحاد کو ضروری قرار دیا ۔ سدھاکر ریڈی نے کہاکہ قومی سطح پر رونماء ہونے والے واقعات کی روک تھام کے لئے ایک بڑے سکیولر اتحادی فرنٹ کے قیام کی ضرورت ہے جس کا مقصد قومی سطح پر بڑھتی فسطائی اور بیرونی پالیسیوں سے عام ہندوستانیوں کو ہونے والے نقصانات کے خلاف ملک گیر محاذ آرائی کرے ۔ انہوں نے کہاکہ سی پی آئی نیشنل کونسل اجلاس میں چند قرار دادیں پیش کی گئی جس کے مطابق سی پی آئی 17 اگست کو کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا قومی سطح پر بڑھتی مہنگائی اور نو تجارتی مرکز میں ایف ڈی آئی کے داخلوں کے علاوہ کسانوں کو فوری راحت رسانی کے مطالبات پر احتجاجی پروگرام منعقد کرے گی۔ اس کے علاوہ 2 ستمبر کی معلنہ ورکنگ کلاس قومی ہڑتال کو بھی سی پی آئی کی مکمل تائید وحمایت حاصل رہے گی اور پارٹی آرگنائزیشن کے متعلق چندی گڑہ کونسل میٹنگ میں لئے گئے فیصلوں پر عمل آوری کے علاوہ پارٹی کی محاذی تنظیموں کو مضبوط ومستحکم کرنے

 

اور انہیں ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کے اقدامات کئے جائیں گے ۔ سدھاکر ریڈی نے بتایا کہ بڑھتی عدم روداری اور سکیولرز م کے فروغ کے عنوان پر ریاستی او ر ضلعی سطحی پر کنونشنس منعقد کئے جائیں گے ۔ اس کے علاوہ ریاست اتر پردیش ‘ اتراکھنڈ ‘ پنجاب ‘ منی پور ‘ گوا اور گجرات انتخابات کی تیاری اور بستر ضلع کے قبائیلوں کے ساتھ اظہار ہمدردی جیسے پروگرامس ماہ ستمبر میں منعقدکئے جائیںگے ۔ انہوں نے ضلع بستر کے قبائیلوں پر ماوسٹ کے نام سے اندھا دھند فائرنگ کی روک تھام کا بھی مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ۔ انہوں نے کہاکہ آپریشن گرین ہنڈ کے نام پر   قبائیلوں کاعرصہ حیا تنگ کیا جا رہا ہے ۔ حکومت ہند کی جموں کشمیر پالیسی پر بھی سوال اٹھاتے ہوئے کہاکہ جموں کشمیر کی موجودہ صورتحال پر پی ڈی پی اور بی جے پی اتحادی حکومت کی مجرمانہ خاموشی جموں کشمیر عوام کیلئے تکلیف دہ ثابت ہورہی ہے ۔ سدھاکر ریڈی نے جموں کشمیر تشدد کے دوران بے قصور افراد کی بھی فوجی دستوں کے ہاتھوں گرفتاریاں عمل میں آئیں ہیں ۔ سدھاکر ریڈی نے بے قصور افراد کی رہائی کے ساتھ جموں کشمیر میںعام زندگی بحال کرنے کیلئے موثر اقدامات اٹھانے کا مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا ۔ اس موقع پر سی پی آئی قومی عاملہ کے رکن سید عزیز پاشاہ ‘ سی پی آئی تلنگانہ اسٹیٹ سکریٹری چاڈاوینکٹ ریڈی ‘ پی وینکٹ ریڈی بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT