Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / ایوان کی کارروائی میں بار بار مداخلت پر وزیراعظم جان کی کو باہر نکال دیا گیا

ایوان کی کارروائی میں بار بار مداخلت پر وزیراعظم جان کی کو باہر نکال دیا گیا

آکلینڈ ۔ 12 مئی (سید مجیب کی رپورٹ) کسی بھی ملک کا وزیراعظم ہونا کوئی معمولی بات نہیں ہے لیکن جمہوری طرز حکومت میں وزیراعظم کو بھی خصوصی مراعات نہ دیئے جانے کی ایک ایسی مثال سامنے آئی ہے جس کی تقلید ہر جمہوری حکومت کو کرنی چاہئے۔ نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ میں پناما دستاویزات کے افشاء کے موضوع پر مباحثہ جاری تھا۔ تاہم وہاں موجود وزیراعظم جان کی بار بار اس میں مداخلت کرتے ہوئے مباحثہ کو صحیح انداز میں جاری رکھتے ہوئے رکاوٹ بنے ہوئے تھے۔ ایوان کے اسپیکر ڈیوڈ کارٹر نے انہیں بار بار ٹوکا اور بصداحترام کہا کہ وزیراعظم ہونے کے ناطے آپ سے کوئی مروت نہیں کی جائے گی لہٰذا آپ خاموش ہوجایئے لیکن جان کی نے کوئی توجہ نہ دی جس پر اسپیکر ڈیوڈ کارٹر کی ہدایت پر مارشلس نے وزیراعظم کو ایوان سے نکال باہر کیا۔ نیوزی لینڈ کی تاریخ میں یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے۔ پارلیمانی ریکارڈس سے پتہ چلتا ہیکہ جان کی کواس سے قبل جب وہ ایم پی تھے ، تین موقعوں پر ایوان سے باہر نکالا جاچکا ہے جبکہ نیوزی لینڈ کے وزیراعظم ہونے کے ناطے بھی یہ ان کے ساتھ پیش آیا پہلا واقعہ نہیں ہے۔ 1986ء اور 1987ء میں اس وقت کے وزیراعظم ڈیوڈ لانگے کو اور 2005ء میں سابق وزیراعظم ہیلن کلارک کو بھی ایوان کی کارروائی میں بار بار رخنہ اندازی کرنے پر ایوان سے باہر نکالا جاچکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT