Friday , August 18 2017
Home / ہندوستان / ایودھیا کیس کے وکلاء کو مناسب سیکوریٹی فراہم نہ کرنے کی شکایت

ایودھیا کیس کے وکلاء کو مناسب سیکوریٹی فراہم نہ کرنے کی شکایت

لکھنو ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( سیاست ڈاٹ کام ) : الہ آباد ہائی کورٹ نے مرکزی اور ریاستی حکومت کے قانونی مشیر ( کونسل ) کو ہدایت دی ہے کہ ایودھیا معاملہ میں نمائندگی کرنے والے وکلاء کو مناسب سیکوریٹی فراہم نہ کرنے کی شکایت پر وضاحت پیش کی جائے۔ قبل ازیں عدالت نے اس خصوص میں ہدایات دی تھیں ۔ جسٹس دیویندر کمار اپادھیائے اور جسٹس راجن رائے پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے کل درخواست گذار کے وکیل ایچ ایس جین کی ایک عرضی پر یہ احکامات جاری کئے ۔ جین نے بتایا کہ قبل ازیں عدالت نے ایودھیا معاملہ میں نمائندگی کرنے والے وکلاء کو مناسب سیکوریٹی کی فراہمی کے لیے ہدایت جاری کی تھی ۔ لیکن کوئی عملی اقدام نہیں کیا گیا ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ عدالتی احکامات کے مطابق ان وکلاء کو سیکوریٹی فراہم نہیں کی گئی ہے۔ ہائی کورٹ نے کیس کی آئندہ سماعت 30 اکٹوبر تک ملتوی کرتے ہوئے مدعی علیہ کے وکیل سے کہا کہ اس شکایت کا جائزہ لے کر حکومت سے ہدایات طلب کئے جائیں۔ ایودھیا متنازعہ مقام پر 1992ء تک بابری مسجد قائم تھی لیکن اکثریتی طبقہ کا دعویٰ تھا کہ یہ رام جنم بھومی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT