Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / ایودھیا کے عارضی مندر کی تارپولین تبدیل کرنے سپریم کورٹ کی اجازت

ایودھیا کے عارضی مندر کی تارپولین تبدیل کرنے سپریم کورٹ کی اجازت

نئی دہلی ۔10اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے آج تارپولین تبدیل کرنے کی اجازت دے دی جو (پرانا اور بوسیدہ ) ہوچکا ہے ۔ رسیاں اور دیگر اشیاء کی جگہ نئی رسیاں اور نئی اشیاء فراہم کرنے کی بھی اجازت دے دی گئی جو ایودھیا کے عارضی رام مندر کے پاس موجود ہیں ۔ جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کی زیر قیادت سپریم کورٹ ایک بنچ نے کہا کہ ہم بااختیار افراد / کمشنر فیض آباد کو اجازت دیتے ہیں کہ قدیم اور بوسیدہ تارپولین ‘ پٹسن  کی چٹائیاں اور بانس ‘ پالیتھین کی چادر اور رسیاں جو عارضی عمارت سے متعلق ہیں اُن کی جگہ نئی اشیاء لگانے کی اجازت دیتے ہیں جو اسی جسامت اور اسی معیار کی اوربالکل اسی انداز کی ہونا چاہیئے جو قبل ازیں موجود تھیں ۔ تبدیلی کا طریقہ کار دو مبصرین کی زیرنگرانی ہونا چاہیئے جو قبل ازیں اس مقام کا دورہ کرچکے ہیں ۔ بنچ میں جسٹس وی آر گوپالا گوڑہ اور جسٹس آر بھانو متی بھی شامل تھیں ۔ دریں اثناء عدالت نے رجسٹری کو ہدایت دی کہ سی ڈیز کی نقلیں جن میں مقدمہ سے متعلق ڈیجیٹل کئے ہوئے ریکارڈ موجود ہیں ‘ فریقین کو فراہم کریں ۔ بنچ نے ان درخواستوں کو مسترد کردیا کہ فریقین کو ریکارڈ کا معائنہ کرنے دیا جائے ۔

TOPPOPULARRECENT