Thursday , August 17 2017
Home / شہر کی خبریں / ایچ ای ایچ دی نظامس چیارٹیبل ٹرسٹ کے ملازمین حقوق کیلئے عدالت سے رجوع

ایچ ای ایچ دی نظامس چیارٹیبل ٹرسٹ کے ملازمین حقوق کیلئے عدالت سے رجوع

ٹرسٹ کی سرد مہری پر اقدام ، سبکدوشی کے اہم فوائد سے محروم کرنے پر مشکلات کا شکار
حیدرآباد ۔ 17 ۔ اگست (سیاست  نیوز) ایچ ای ایچ دی نظامس چیاریٹیبل ٹرسٹ کے ملازمین اپنے حقوق کیلئے گزشتہ کئی برسوںسے جدوجہد کر رہے ہیں لیکن چیاریٹیبل ٹرسٹ کے ارکان اور عہدیداروں کے سرد مہری کے رویہ نے انہیں عدالت سے رجوع ہونے پر مجبور کردیا ہے ۔ 2002 ء 2010 ء تک تین مراحل میں تقریباً 40 ملازمین کو رضاکارانہ سبکدوشی اسکیم کے تحت ملازمت سے سبکدوش کردیا گیا لیکن انہیں سبکدوشی سے متعلق اہم فوائد سے محروم رکھا گیا جس کے باعث وہ مالیاتی مشکلات کا شکار ہیں۔ نظام چیاریٹیبل ٹرسٹ کے ملازمین نے شکایت کی کہ انہیں رضاکارانہ سبکدوشی کے موقع پر جو تیقنات دیئے گئے تھے، ان سے انحراف کرلیا گیا، جن میں وظیفہ کی منظوری اور دیگر فوائد شامل ہیں۔ ملازمین جو انصاف کے حصول کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں، انہوں نے اس سلسلہ میں محکمہ انڈومنٹ سے شکایت کی ہے، جس پر کمشنر انڈومنٹ نے ڈائرکٹر اسٹیٹ آڈٹ کو نظامس چیاریٹیبل ٹرسٹ کے مالیاتی امور کی آڈٹ کی ہدایت دی ہے ۔ ایک طرف آڈٹ کا کام جاری ہے تو دوسری طرف انصاف سے محروم ملازمین عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے پر غور کر رہے ہیں کیونکہ انصاف کے حصول کیلئے ان کے پاس کوئی اور راستہ نہیں۔ ملازمین کے نمائندوں نے بتایا کہ وہ اس مسئلہ کو اسٹیٹ مائناریٹی کمیشن سے بھی رجوع کریں گے۔ ملازمین نے بتایا کہ 2002 ء، 2008 اور 2010 ء میں مرحلہ وار 40 ملازمین کو جبری طور پر رضاکارانہ سبکدوشی کیلئے مجبور کیا گیا۔ انہیں لازمی سبکدوشی اسکیم کے تحت ملازمت سے علحدہ کرنے اور تمام ضروری فوائد سے محروم کرنے کی دھمکی دی گئی جس پر انہوں نے رضاکارانہ سبکدوشی اختیار کرلی۔ ان کا کہناہے کہ 2010 ء میں 14 ملازمین کو سبکدوش کیا گیا اور ان سے وظیفہ کی ادائیگی کا وعدہ کیا گیا لیکن اب ٹرسٹ کے حکام اس طرح کے کسی بھی وعدہ سے صاف انکار کر رہے ہیں۔ انہوں نے شکایت کی کہ وہ 2010 ء میں سبکدوش کئے گئے ملازمین کو 2008 ء کی بنیادی تنخواہ کے حساب سے ایکس گریشیا ادا کیا گیا اور گریجویٹی کی رقم سے 15 فیصد کی کٹوتی کی گئی جو قانون کی خلاف ورزی ہے۔ ملازمین نے کہا کہ وہ دو سال کے فوائد سے محروم ہوچکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ حکام کی ناانصافی کے سبب کئی خاندان مالی مسائل کا شکار ہوچکے ہیں۔ دوسری طرف ٹرسٹ کے سکریٹری سلطان محی الدین نے وضاحت کی کہ تمام ملازمین نے رضاکارانہ سبکدوشی کے معاہدہ پر دستخط کئے ہیں اور انہیں لاکھوں روپئے معاوضہ ادا کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ ٹرسٹ نے تقریباً 2.5 کروڑ روپئے ملازمین کو معاوضہ کے طور پر ادا کئے ہیں۔ سکریٹری کے مطابق فی الوقت ٹرسٹ کی حالت معاشی طورپر مستحکم نہیں ہے اور ٹرسٹ کا آفس کرایہ کی بلڈنگ میں کام کر رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT