Tuesday , October 24 2017
Home / شہر کی خبریں / ایچ سی یو میں کنہیا کے پروگرام کو ناکام بنانے کی سازش ، وائس چانسلر روہت کی موت کے ذمہ دار

ایچ سی یو میں کنہیا کے پروگرام کو ناکام بنانے کی سازش ، وائس چانسلر روہت کی موت کے ذمہ دار

اپاراؤ کو عہدہ سے برطرف کرنے کا مطالبہ ، کے سی آر کو صدر جمہوریہ کے نام مکتوب ارسال کرنے پر زور : وی ہنمنت راؤ
حیدرآباد ۔ 23 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں کنہیا کمار کے پروگرام کو ناکام بنانے کے لیے ایک منظم سازش کے تحت روہت ویمولا کی موت کے ذمہ دار رہنے والے وائس چانسلر اپا راؤ کو دوبارہ ڈیوٹی پر رجوع کرایا گیا ۔ جس سے کشیدگی پیدا ہوگئی ۔ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر صدر جمہوریہ کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے اپا راؤ کو وائس چانسلر کے عہدے سے دستبردار کرائے ۔ آج گاندھی بھون میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کل حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں طلبہ پر پولیس لاٹھی چارج اور غیر قانونی طور پر شہر کے دو پولیس اسٹیشن میں 25 طلبہ کو حراست میں رکھنے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پولیس دباؤ کا شکار ہو کر کام کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ روہت ویمولا کی خود کشی کے بعد حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں بڑے پیمانے پر احتجاج ہوا اور سارے ملک میں موضوع بحث بن گیا جس کی وجہ سے وائس چانسلر چھٹی پر چلے گئے حالات کشیدہ ہیں اور طلبہ میں غم و غصہ ہے ۔ روہت ویمولا کی والدہ سے اظہار یگانگت کرنے اور ایچ سی یو کے طلبہ سے ملاقات کرنے کے لیے کنہیا کمار نے جیسے ہی حیدرآباد پہونچنے کا اعلان کیا ایک منظم سازش کے تحت کنہیا کمار کے پروگرام کو ناکام بنانے کے لیے وائس چانسلر اپا راؤ کو ڈیوٹی سے رجوع کرایا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کشیدہ حالات میں وائس چانسلر ڈیوٹی سے رجوع ہوئے اور اے بی وی پی کے کارکن پہونچ کر حالات کو مزید پیچیدہ بنادیا گیا ہے ۔ پرامن احتجاج کرنے والے طلبہ پر پولیس نے لاٹھی چارج کیا ہے ۔ ہنمنت راؤ نے حیدرآباد سنٹرل یونیورسٹی میں پھر ایکبار حالات کشیدہ ہوجانے پر تشویش کا اظہار کیا اور چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر پر زور دیا کہ وہ طلبہ کی جانب سے صدر جمہوریہ ہند پرنب مکرجی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے اپا راؤ کو وائس چانسلر کے عہدے سے علحدہ کردیں ۔ ورنہ یونیورسٹی میں لا اینڈ آرڈر کے جو بھی مسائل پیدا ہوں گے اس کے لیے حکومت ذمہ دار ہوگی ۔ مسٹر ہنمنت راؤ نے کہا کہ انہیں اطلاع ملی ہے کہ طلبہ نے میڈیا کے نمائندوں پر بھی حملہ کیا ہے ۔ جس پر وہ طلبہ کی طرف سے صحافت سے معذرت خواہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کو وائس چانسلر اپا راؤ سے ہمدردی ہے تو وہ انہیں کسی دوسری یونیورسٹی کا وائس چانسلر نامزد کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT