Thursday , June 29 2017
Home / Top Stories / ایچ ون بی ویزا پروگرام میں سختی سے ہندوستان کو مسائل

ایچ ون بی ویزا پروگرام میں سختی سے ہندوستان کو مسائل

ہندوستانی آئی ٹی پیشہ وروں کا امریکی معیشت کے فروغ میں کلیدی رول، امریکی وزیرتجارت سے جیٹلی کی بات چیت

واشنگٹن ۔ 21 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) وزیرفینانس ارون جیٹلی نے امریکی وزیرکامرس دلبر راس سے بات چیت کے دوران ایچ ون بی  ویزا پروگرام کو سخت بنانے ٹرمپ انتظامیہ کی کوششوں پر پوری شدت کے ساتھ مسئلہ اٹھایا اور کہا کہ امریکی معیشت کے فروغ میں ا علیٰ ہنر و صلاحیت کے حامل ہندوستانی پیشہ ور ماہر کلیدی رول ادا کررہے ہیں۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ایچ ون بی ویزا کے بیجا استعمال کو روکنے کے علاوہ سب سے باصلاحیت اور سب سے زیادہ تنخواہ پانے والوں کو ہی ویزا اجرائی کو یقینی بنانے کیلئے ایک عاملانہ حکمنامہ پر گذشتہ ہفتہ دستخط کرتے ہوئے اس ویزا پروگرام کو انتہائی سخت بنادیا تھا۔ ان کے اس اقدام پر ہندوستانی آئی ٹی صنعت نے گہری تشویش کا اظہار کیا تھا۔ یہ ویزا بالعموم امریکہ میں مقامی آئی ٹی پیشہ ور قلیل مدتی ملازمت کیلئے استعمال کیا کرتے ہیں۔ اس ملاقات کے دوران، جو امریکی صدارت پر ڈونالڈ ٹرمپ کے فائز ہونے کے بعد دونوں ملکوں کا کابینی سطح پر پہلا رابطہ بھی ہے، جیٹلی نے راس سے کہا کہ اس اقدام سے ہندوستانی ماہر پیشہ وروں کو دشواری ہوگی۔ باور کیا جاتا ہے کہ راس نے جیٹلی سے کہا کہ امریکہ نے ویزا کی اجرائی کے عمل پر دوبارہ غور کا آغاز  کیا ہے لیکن تاحال اس ضمن میں کوئی قطعی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔ امریکی مارکٹ کو ہندوستانی آئی ٹی صنعت سے 60 فیصد آمدنی ہوئی ہے۔ جیٹلی نے جو بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) اور ورلڈ بینک کے سالانہ اجلاسوں میں شرکت کیلئے اپنے زیرقیادت ایک وفد کے ساتھ پہنچے ہیں۔ توقع ہیکہ امریکہ، آسٹریلیا، فرانس، سویڈن اور انڈونیشیاء کے علاوہ ہندوستان کے دو پڑوسی ملکوں سری لنکا اور بنگلہ دیش کے وزرائے فینانس سے بھی ملاقات کریں گے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT