Sunday , May 28 2017
Home / ہندوستان / ایک ساتھ تمام انتخابات کیلئے قانونی چوکھٹاضروری

ایک ساتھ تمام انتخابات کیلئے قانونی چوکھٹاضروری

نئی دہلی ۔ 20نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے لوک سبھا اور ریاستی  اسمبلیوں کے بیک وقت انتخابات کے انعقاد پر زور دینے کے دوران وزارت قانون نے تجویز پیش کی ہے کہ اس مسئلہ کے قانونی اور دفاعی پہلوؤں پر بھی علحدہ طور پر غور کیا جائے ۔ وزارت نے حکومت کی اعلیٰ ترین سطح کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے کہا کہ اس مسئلہ کو غور کرنے کیلئے دو حصوں میں تقسیم کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمانی مجلس قائمہ برائے قانون نے گذشتہ ڈسمبر میں دونوں انتخابات ایک ساتھ منعقد کرنے کی تجویز پیش کی تھی اور وزارت قانون اس سلسلہ میں اپنے نظریات الیکشن کمیشن کے سامنے پیش کرچکا ہے ۔ کمیشن جس نے اس نظریہ کی تائید کی تھی ‘ واضح کردیا کہ اس کے نتیجہ میں خطیر رقم خرچ ہوگی اور دستور میں ترمیم کرتے ہوئے بعض ریاستی اسمبلیوں کی میعاد میں تخفیف کرنا پڑے گا ۔ مجلس قائمہ اور الیکشن کمیشن کی رپورٹ کا تجزیہ کرنے کے بعد وزارت قانون نے اس مسئلہ کو دو حصوں میں تقسیم کردیا ہے ۔ ایک حصہ میں اس تجویز کے قانونی پہلو اور دوسرے حصہ میں دفاعی ‘ انفراسٹرکچر اور مالیاتی پہلوؤں پر بحث کی گئی ہے ۔ وزارت قانون نے ماہ مئی میں اپنے جواب میں الیکشن کمیشن سے کہا کہ وہ اس تجویز کی تائید کرتی ہے لیکن اس کیلئے 9ہزار کروڑ روپئے کا خرچ ہوگا ۔ پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس پر بیان دیتے ہوئے بیک وقت لوک سبھا اور ریاستی اسمبلیوں کے انتخابات کے مالیاتی پہلو اور اس سلسلہ میں درپیش مشکلات سے کمیٹی کو واقف کروایا گیا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT