Tuesday , August 22 2017
Home / دنیا / ایک فیصد آبادی دنیا کی نصف دولت کی مالک

ایک فیصد آبادی دنیا کی نصف دولت کی مالک

واشنگٹن 7 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) دنیا کے محض ایک فیصد بانشدے خود کو عرب پتی یا دولتمند قرار دے سکتے ہیں تاہم بحیثیت مجموعی ان کے پاس دنیا کی جملہ دولت کا نصف موجود ہے اور ان کی دولت میں مسلسل اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔ ایک نئے مطالعہ میں یہ بات سامنے آئی ہے ۔ دنیا بھر میں کم از کم 18.5 ملین گھرانوں میں کم از کم 1 ملین ڈالرس مالیتی اثاہث جات ہیں۔ یہ جملہ 78.8 ٹریلین ڈالر کے مساوی ہیں یا پھر اسے عالمی سالانہ معاشی آوٹ پٹ کے مساوی قرار دیا جاسکتا ہے ۔ بوسٹن کنسلٹنگ گروپ کی سالانہ رپورٹ میں یہ بات بتائی گئی ہے ۔اس میں دنیا کی جملہ دولت کا 47 فیصد حصہ ایسا ہے جو نقد رقم ‘ معاشی اکاؤنٹس اور حصص کی شکل میں ہے رئیل اسٹیٹ کی شکل میں نہیں ہے ۔ دولت کا مابقی حصہ دنیا کی 99 فیصد آبادی میں تقسیم ہوتا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ دنیا کی دولتمند ترین ایک فیصد آبادی کی دولت میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔ یہ دولت جب 2013 میں جہاں 45 فیصد تھی وہ گذشتہ سال تک بڑھ کر 47 فیصد ہوگئی ہے ۔ ماہرین معاشیات نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ عالمی سطح پر عدم مساوات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT