Tuesday , April 25 2017
Home / ہندوستان / ایک ہاتھ میں متن اور دوسرے ہاتھ میں بندوق کے ساتھ بات چیت ناممکن : ایم جے اکبر

ایک ہاتھ میں متن اور دوسرے ہاتھ میں بندوق کے ساتھ بات چیت ناممکن : ایم جے اکبر

ممبئی ۔13 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر مملکت برائے اُمور خارجہ ایم جے اکبر نے کہا کہ دہشت گردی پاکستان کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے ۔ انھوں نے کہاکہ ہرچیز ممکن ہے لیکن ایک ہاتھ میں امن بات چیت کا متن اور دوسرے ہاتھ میں بندوق لے کر بات چیت ناممکن ہے ۔ جب لوگ بندوق ترک کردیتے ہیں تو اقوام اور عوام خیرسگالی اور بقائے باہم کے راستے پر پیشرفت کرسکتے ہیں۔ وہ معاشی مذاکرات کے ہندوستان کے دوسرے گیٹ وے کی تقریب سے خطاب کررہے تھے ۔ انھوں نے کہاکہ بندوق کے سائے تلے کوئی بھی بات چیت نہیں کرتا ۔ کاروباری اور خارجہ پالیسی میں ہم آہنگی ہونی چاہئے ۔ گیٹ وے ہاؤس اور وزارت خارجہ دو روزہ تقاریب کے میزبان ہیں۔ اکبر نے یاد دہانی کی کہ تاج ہوٹل جہاں یہ تقریب منعقد کی جارہی ہے ، 26 نومبر کے ممبئی دہشت گرد حملوں میں ایک اہم مقام تھا ۔ انھوں نے کہاکہ امن کے بغیر معاشی ترقی ناممکن ہے ۔ صرف معاشی ترقی ہی کافی نہیں بلکہ غریب ترین افراد کو معاشی ترقی سے سب سے پہلے فائدہ اُٹھانا چاہئے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT