Thursday , August 17 2017
Home / اضلاع کی خبریں / اے ایس آئی موہن ریڈی کا کیس سی آئی ڈی کے حوالے

اے ایس آئی موہن ریڈی کا کیس سی آئی ڈی کے حوالے

کریم نگر /5 نومبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کین کرسٹ اسکول ڈائرکٹر رام گیری پرساد راؤ کی خودکشی کے اسباب پیدا کرنے کے الزام میں ملوث گرفتار شدہ اے ایس آئی بی موہن ریڈی پر مبنی لینڈر سیکشن کے تحت درج کردہ مقدمہ کو کرائم انوسیٹگیشن ڈپارٹمنٹ کو منتقل کردیا گیا ہے ۔ اس سلسلہ تلنگانہ سی آئی ڈی ڈی جی ستیہ نارائنا سے ضلعی پولیس عہدیداران اعلی کو کریم نگر کو ٹاون ایس ایچ او کو احکامات جاری ہوئے ہیں ۔ گذشتہ جمعرات پرساد راؤ کے پھانسی لے کر خودکشی کرلینے پر موہن ریڈی اسسٹنٹ سب انسپکٹر کا دھمکانا ہی اصل وجہ ہے ۔ کہا جارہا ہے مہلوک کی اہلیہ گوتمی پرساد راؤ نے پولیس کو دی گئی تحریری شکایت میں اور اسی کے ساتھ مہلوک کا خودکشی سے پہلے تحریر کردہ نوٹ بھی پولیس کے حوالے کیا گیا ہے ۔ حیدرآباد سے بی وی آرکیشو بی آر راؤ پر مقدمہ درج کرنے والی کریم نگر ٹو ٹاون کی پولیس نے موہن ریڈی کو ہفتہ کی شب گرفتار کرلیا تھا ۔ سیاست میں یہ خبر شائع ہوچکی ہے ۔ اس کیس کی تحقیقات کیلئے پولیس تحویل میں دئے جانے کیلئے عدالت میں درخواست دی گئی تھی ۔ اس پرمباحثہ کے دوران ہی مقدمہ سی آئی ڈی کو منتقل کئے جانے کیلئے احکامات مل چکے ہیں ۔ اس تعلق سے عدالت کو واقف کروایا گیا ۔ محکمہ پولیس میں اے ایس آئی کام انجام دیتے ہوئے سودی کاروبار کرنے کے تعلق سے معلومات تھیں ۔ اس لئے کہ موہن ریڈی کے پاس پولیس محکمہ میں برسر خدمت سی آئی سطح سے لے کر اعلی عہدوں پر فائز پولیس عہدیداروں کی ایک بری رقم بھی اس سودی کاروبار میں شامل کئے جانے کے الزامات ہیں ۔ موہن ریڈی اونچی شرح سود پر قرض دے کر وقت پر وعدہ کے مطابق سود اور اصل رقم ادا کرنے پر اپنے دیگر ساتھیوں کے ذریعہ مقروض کی جائیداد پر قبضہ کرلینے کے الزامات ہیں ۔ اس طرح کی شکایت ملنے کے باوجود ضلع کے اعلی عہدیدار اس کی پشت پناہی کر رہے تھے ۔ یہ کہا جارہا ہے کہ موہن ریڈی کا کہیں بھی تبادلہ کئے جانے پر وہی دوبارہ مستقر پر ڈیپوٹیشن یا پھر ضلع کے قریبی پولیس اسٹیشن پر اپنی ڈیوٹی ڈالوانے کا بھی الزام ہے ۔ پولیس اسٹیشن میں اس نے منجریال دکھا ہے جس کی وجہ سے تمام جانکاری مل جاتی تھی ۔ اس کی بات نہ سننے والے ایس ایچ او پر دباؤ ڈال کر راستے پر لانا تھا اور تبادلوں کے عمل دخل میں کلیدی رول ادا کرنے کا الزام ہے ۔ ان حالات میں موہن ریڈی کے مقدمہ سی آئی ڈی کے حوالے کردیا گیا ہے ۔ رام گیری پرساد راؤ کی خودکشی کے واقعہ کی چھان بین پر درج مقدمہ کو اچانک سی آئی ڈی کے حوالے کیا جانا محکمہ پولیس تشویش پیدا کردی ہے ۔ کیونہ اس مقدمہ کی گہرائی سے تحقیاقت کی جاکر اس سودی لین دین میں کون کون شامل ہیں کس نے کتنا سرمایہ مشغول کیا تھا ۔ کون سے عہدیداران پولیس موہن ریڈی کا مدد کر رہے تھے ۔ اس بھاری شرح دوسی کاروبار میں کون کون بے نامی دھندہ کرتے ہوئے مقروض کی جائیداد پر قبضہ کرچکے ہیں ۔ موہن ریڈی کی گرفتاری پر کچھ افراد کچھ تنظیموں جیسے لوک ستہ تحریک کی جانب سے مطالبہ کیا جارہا ہے نہ صرف ضلع سپرنٹنڈنٹ پولیس ڈی جی پی کو شکایت کردی ہے کہ موہن ریڈی سے تعلق رکھنے والے سودی کاروبار میں شامل افراد کی چھان بین کرتے ہوئے ان کی جائیدادوں کو ضبط کریت ہوئے سخت قانونی کارروائی کی خواہش کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT