Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / اے پی کو خصوصی درجہ نہ دینے کا فیصلہ سازش کا حصہ:جے رام رمیش

اے پی کو خصوصی درجہ نہ دینے کا فیصلہ سازش کا حصہ:جے رام رمیش

نئی دہلی 3 اگست ( یو این آئی )سابق مرکزی وزیر جے رام رمیش نے واضح کیا ہے کہ اے پی کو خصوصی درجہ نہ دینے کا فیصلہ منظم سیاسی سازش کا حصہ ہے ۔انہوں نے دہلی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم مودی نے یکطرفہ طور پر خصوصی درجہ کے وعدہ کو فراموش کردیا ہے ۔ اے پی کے علاوہ مزید 11ریاستیں خصوصی درجہ کا حق رکھتی ہیں۔ انہو ں نے مختلف ریاستوں کا حوالہ بھی دیا اور کہا کہ خصوصی درجہ نہ دینے مرکز کے فیصلہ سے کانگریس کی زیر حکومت ریاستوں کو نقصان ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ ان 11 ریاستوں میں چھ میں کانگریس کی حکومت ہے ۔ انہوں نے الزام لگایا کہ گزشتہ روز ریاست میں منائے گئے بند کو اے پی کے وزیراعلی چندرابابو نائیڈو نے ناکام قرار دیا تھا جو غلط ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر چندرا بابو نائیڈو خصوصی درجہ کیلئے وزیر اعظم پر دباؤ ڈالتے ہیں تو اس کا سہرا انہیں ہی ملے گا ۔ انہوں نے واضح کیا کہ اے پی کیلئے خصوصی درجہ نہ دیتے ہوئے ریاست کے عوام سے ناانصافی کی گئی ہے ۔راج موہن نے کہا کہ حکومت ہند نے اے پی کی تقسیم کے موقع پر کئی وعدے کئے تھے ۔اس وقت کی منموہن سنگھ حکومت نے پانچ سال کیلئے اے پی کو خصوصی درجہ دینے کا وعدہ کیا تھا لیکن بی جے پی نے دس سال کا مطالبہ کیا تھا ۔انہوں نے کہا کہ نئی ریاست کو کئی مسائل کا سامنا ہے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ خصوصی درجہ کے مسئلہ پر ضرورت پڑنے پر ہر طرح کا احتجاج کیا جائے گا ۔ریاست کے عوام کے جذبات سے ایوان کو واقف کروانے کیلئے یہ احتجاج کیا جارہا ہے ۔ خصوصی درجہ نہ ملنے سے عوامی برہمی پائی جاتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT