Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / ا1000 اقلیتی نوجوانوں کو 50 فیصد سبسڈی پر آٹوز کی فراہمی

ا1000 اقلیتی نوجوانوں کو 50 فیصد سبسڈی پر آٹوز کی فراہمی

حیدرآباد 5 ستمبر ( سیاست نیوز ) حکومت تلنگانہ میں ماہ رمضان المبارک میںآئمہ و موذنین کیلئے ماہانہ اعزازیہ کی اسکیم کا اعلان کیا تھا اور اب اس نے آٹو ڈرائیورس کیلئے نئی اسکیم بنائی ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی نے اس اسکیم کے متعلق بتایا کہ بے روزگار کرایہ کے آٹوز چلا کر زندگی بسر کرنے والوں کیلئے حکومت تلنگانہ نے منفرد اسکیم کا اعلان کیا تاکہ فینانسروں ، چٹھی والوں اور آٹوز مالکین کی ہراسانی سے ایک بڑے طبقہ کو راحت فراہم کی جاسکے ۔ مساجد کے آئمہ اور موذن حضرات کے بعد اب حکومت بے روزگار اقلیتی نوجوان بالخصوص کرایہ کے آٹوز چلانے والوں کیلئے آٹو مالک بننے کی اسکیم کو رائج کیا ہے ۔ مسٹر محمود علی کی خصوصی کاوشوں سے اسکیم کو تیار کیا گیا ہے ۔ جو گریٹر حیدرآباد حدود میں عمل میں آئیگی ۔ 50 فیصد سبسیڈی کے ذریعہ مسلمانوں کیلئے رائج کردہ اس اسکیم کے تحت ایک ہزار آٹوز جاری کئے جائیں گے ۔ اس خصوص میں ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمود علی نے کہا کہ حکومت مسلم اقلیت کے مسائل کی یکسوئی کیلئے سنجیدگی سے عملی اقدامات کررہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ آج گریٹر حیدرآباد بالخصوص پرانے شہر میں ایسے نوجوانوں کی اکثریت ہے جو تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود بھی آٹوز چلانے پر مجبور ہے ۔ ان کی معاشی حالت انہیں ذاتی آٹوز کے حقدار بننے کی اجازت نہیں دیتی اور ان نوجوانوں کے کندھوں پر اپنے افراد خاندان کی کفالت کرنے کی ذمہ داری ہے اور کئی افراد سالوں سے آٹوز کرایہ پر حاصل کرتے ہوئے زندگی بسر کررہے ہیں ۔ ان کا کوئی ذاتی آٹو نہیں ۔ عید ، تہوار ، شادی ، تقاریب ، تعلیم ، طب جیسے موقع اور مسائل پر ان خاندانوں کو سوائے سود پر قرض حاصل کرنے کے کوئی اور راستہ نہیں رہتا ۔ اس سنگین مسئلہ کی یکسوئی اور راحت فراہم کرنے اسکیم کو شروع کیا جارہا ہے ۔ مسٹر محمود علی نے بتایا کہ اقلیتی مالیاتی کارپوریشن سے منسلک اس اسکیم کے تحت 50 فیصد سبسیڈی پر آٹو جاری کیا جائے گا ۔ ایک آٹو کی قیمت ایک لاکھ 40 ہزار روپئے ہے ۔ جس میں 70 ہزار اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کی جانب سے جاری کئے جائیں گے ۔ اور 70 ہزار کو بینک سے مربوط کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے اس اسکیم کی فائل پر فوری دستخط کرتے ہوئے احکامات جاری کرنے کے چیف منسٹر کے اقدام کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ چیف منسٹر مسلم اقلیت کی فلاح و بہبود و ترقی کیلئے ہر ممکنہ اقدام کرنے کافی سنجیدہ ہیں ۔ اس سلسلہ میں انہوں نے جی او نمبر 36 بھی جاری کردیا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے بتایاکہ اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کو انتظامی امور کی فوری تکمیل کے احکامات جاری کردئیے گئے ہیں تاکہ ایک ہزار آٹوز کا فوری طور پر رجسٹریشن کروادیا جائے ۔ جناب محمود علی نے اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ حکومت کی عوامی مقبولیت سے خوف زدہ اپوزیشن بجائے تعمیری رول ادا کرنے کے تنقید کے ذریعہ عوام کو گمراہ کرنے کی کوششیں کررہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT