Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / بائیں بازو جماعتوں کی مقبولیت سے فرقہ پرست جماعتیں خوفزدہ

بائیں بازو جماعتوں کی مقبولیت سے فرقہ پرست جماعتیں خوفزدہ

جے ایل این ایس یو کے صدر کنہیا کمار کے خلاف سازش ، ڈاکٹر کے نارائنا
حیدرآباد۔17فبروری(سیاست نیوز)قومی سطح پر یونیورسٹیز میںبائیں بازو جماعتوں کی بڑھتی مقبولیت سے خوفزدہ فرقہ پرست تنظیمیں جواہر لال نہرو یونیورسٹی اسٹوڈنٹ یونین کے صدر کنہیا کمار کے خلاف سازشیں کررہے ہیںجبکہ اب تک دہلی پولیس کنہیا کمار کی مخالف ملک سرگرمیو ں پر ثبوت پیش کرنے میں ناکام ہے۔ کمیونسٹ پارٹی کی قومی عاملہ کے رکن سینئر سی پی آئی لیڈر ڈاکٹر نارائنہ نے پارٹی ہیڈ کوارٹر مخدوم بھون میںمنعقدہ پریس کانفرنس کے دوران ان خیالات کا اظہار کیا ۔ اس موقع پر ان کے ہمراہ سی پی آئی تلنگانہ اسٹیٹ جنرل سکریٹری چاڈا وینکٹ ریڈی بھی موجود تھے۔ڈاکٹر کے نارائنہ نے کہاکہ کنہیا کمار کا تعلق سی پی آئی کی طلبہ تنظیم اے آئی ایس ایف سے ہے اور جی این یو کے علاوہ نارتھ انڈیا کی تمام یونیورسٹیز کے طلبہ کنہیاکمار کی قائدانہ صلاحیت کے قائل ہے اور کنہیا کمار کا شمار آر ایس ایس اور اس کی محاذی تنظیمیں اے بی وی پی ‘ وی ایچ پی ‘ بجرنگ دل اور بی جے پی کے فرقہ پرست نظریہ کے متعلق طلبہ میںشعور بیداری مہم چلانے والوں میں ہے اسی وجہہ سے من گھڑت کہانیوںکے ذریعہ کنہیا کمار کو اپنا نشانہ بنانے اور مخالف ملک سرگرمیوںکے جھوٹے الزامات کے تحت اسے ہراساں کرنے کی سازشیں کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کنہیا کمار کی گرفتاری کے ذریعہ بائیں بازو طلبہ تنظیموں کے قائدین اور کارکنوں کا عرصہ حیات تنگ کرنے اور ان کے حوصلوں کو کمزورکرنے کا بھی بی جے پی پر الزام عائد کیا۔ انہوںنے کنہیا کمار کی غیرمشروط رہائی تک اپنی جدوجہد کو جاری رکھنے کا اعلان کیا ۔

TOPPOPULARRECENT