Monday , October 23 2017
Home / ہندوستان / بابری مسجد انہدام کیس ‘ سماعت دو ہفتوں تک ملتوی

بابری مسجد انہدام کیس ‘ سماعت دو ہفتوں تک ملتوی

اڈوانی ‘ جوشی اور دوسرے ملزمین کو تحریری جواب داخل کرنے مہلت
نئی دہلی 23 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے آج بی جے پی لیڈرس ایل کے اڈوانی ‘ مرلی منوہر جوشی اور بابری مسجد انہدام کیس کے دوسرے ملزمین سے کہا کہ وہ اپنا تحریری بیان داخل کریں۔ عدالت نے اس پر مزید سماعت دو ہفتوں کیلئے ملتوی کردی ۔ جسٹس پی سی گھوش اور جسٹس آر ایف نریمان پر مشتمل ایک بنچ نے کیس کے تمام فریقین سے کہا کہ وہ اپنے تحریری دلائل 6 اپریل تک داخل کردیں ۔ عدالت نے آئندہ سماعت 7 اپریل کو مقرر کی ہے ۔ آج سماعت کے آغاز ہی میں سینئر وکیل کے کے وینو گوپال بی جے پی قائدین کی جانب سے پیش ہوئے اور انہوں نے جزوی طور پر سنے گئے مسئلہ پر ایک اور عدالت میں پیش ہونے کی اجازت طلب کی ۔ بنچ نے وینو گوپال کی درخواست قبول کرلی تاہم کہا کہ فریقین کو چاہئے کہ وہ اپنے تحریری بیان اس کیس میں آئندہ سماعت کی تاریخ تک داخل کردیں ۔ جسٹس گھوش نے کل اس مسئلہ پر سماعت کو آج تک ملتوی کردیا تھا کیونکہ کل جسٹس نریمان موجود نہیں تھے ۔ 6 مارچ کو سپریم کورٹ نے ملزمین بشمول اڈوانی ‘ جوشی ‘ اوما بھارتی اور دوسروں کے خلاف الزامات برخواست کردئے جانے کے خلاف اپیل کا جائزہ لینے کا فیصلہ کیا تھا ۔ یہ مقدمہ 1992 میں بابری مسجد کی شہادت سے متعلق ہے ۔

TOPPOPULARRECENT