Sunday , August 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / باہمی کرکٹ کی بحالی کیلئے بی سی سی آئی کی عاجزی ترک کی جائے

باہمی کرکٹ کی بحالی کیلئے بی سی سی آئی کی عاجزی ترک کی جائے

دوسری ٹیموں سے سیریز کے انعقاد پر توجہ دینے پی سی بی کو سابق کپتان جاوید میانداد کا مشورہ
کراچی 6 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سابق پاکستانی کرکٹ کپتان و کوچ جاوید میانداد نے پاکستان کرکٹ بورڈ سے کہا ہے کہ وہ باہمی تعلقات کے احیاء کیلئے ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ کی عاجزی و منت کرنے سے باز آجائے ۔ میانداد نے کہا کہ ہندوستانی قائدین اور وزرا کی جانب سے جو اشتعال انگیز بیانات دئے جا رہے ہیں وہ بدبختانہ ہیں اور ان سے ہند ۔ پاک کرکٹ تعلقات کی کوئی مدد نہیں ہوگی ۔ میانداد نے کل رات یہاں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ نہیں سمجھتے کہ یہ اشتعال انگیز بیانات پاکستان کے تعلق سے ہندوستانی عوام کی حقیقی ترجمانی کرتے ہیں اور ان بیانات کے نتیجہ میں ہم باہمی کرکٹ تعلقات کو بحال کرنے کی سمت آگے نہیں بڑھ پا رہے ہیں۔ میانداد نے کہا کہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ کا جو رویہ ہے اس کی روشنی میں پاکستان کرکٹ بورڈ کو چاہئے کہ وہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ کے آگے پیچھے پھرنا بند کرے اور دوسری ٹیموں کے ساتھ سیریز منعقد کرنے پر توجہ مرکوز کرے ۔ انہوں نے ادعا کیا کہ کرکٹ کے معاملہ میں پاکستان ہمیشہ ہی ہندوستان سے بہتر رہا ہے ۔ پاکستان کے پاس ہندوستان کی بہ نسبت زیادہ صلاحیتیں ہیں۔ ان ( ہندوستان ) کی کرکٹ صرف پیسے اور تجارتی بنیادوں پر چل رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر دونوں ملکوں کے مابین کرکٹ تعلقات بحال ہوجاتے ہیں تو یہ اچھی بات ہوگی لیکن یہ سب کچھ عزت نفس اور ہمارے فخر کی قیمت پر نہیں ہونا چاہئے ۔ سابق پاکستانی فاسٹ بولر شعیب اختر نے بھی حال ہی میں کہا تھا کہ سرحدات کو جو صورتحال ہے اور باہمی تعلقات جس نوعیت کے ہیں وہ کرک تعلقات کیلئے سازگار نہیں ہیں اور پاکستان کو حالات کے بہتر ہونے تک ہندوستان سے کھیلنے کے تعلق سے سوچنا چھوڑ دینا چاہئے ۔ پاکستان کے کچھ دوسرے سابق کرکٹ کپتانوں نے بھی پاکستانی کرکٹ ورڈ کو مشورہ دیا کہ وہ ہندوستانی کرکٹ بورڈ کو باہمی کرکٹ تعلقات بحال کرنے کیلئے راغب کرنے کی کوششیں ترک کردے کیونکہ دونوں ملکوں کے مابین موجودہ تعلقات کرکٹ کیلئے سازگار نہیں ہیں اور دونوں پڑوسی ملکوں کے مابین اعتماد سازی کے مزید اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT