Thursday , July 20 2017
Home / شہر کی خبریں / بجٹ ، طلبہ ، کسان ، زرعی مزدوروں کے لیے انتہائی مایوس کن

بجٹ ، طلبہ ، کسان ، زرعی مزدوروں کے لیے انتہائی مایوس کن

حکومت کے اعداد و شمار حقائق سے بعید ، بی جے پی ایم ایل سی رامچندر راؤ کا ردعمل
حیدرآباد۔13مارچ (سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ کی جانب سے پیش کردہ بجٹ 2017-18نے تلنگانہ عوام کیلئے مایوس کن ہے اورطلبہ ‘ کسانوں‘ زرعی مزدوروں کیلئے تو بے انتہاء مایوس کن ہے کیونکہ ان طبقات کو بجٹ میں کوئی نمایاں اہمیت نہیں دی گئی۔ بی رامچندر راؤ رکن قانون ساز کونسل بی جے پی نے بجٹ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا اور کہا کہ بجٹ حقیقت سے بعید ہے کیونکہ حکومت نے بجٹ میں صرف اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے ہندسوں کا کھیل کھیلا ہے اور اس کھیل میں اخراجات کے پہلو کو مکمل نظر انداز کیا جا چکا ہے۔انہوں نے بتایا کہ حکومت نے عوام کو گمراہ کرنے اور دھوکہ دینے کی جو منصوبہ بندی کی ہے وہ اس بجٹ سے آشکار ہوچکی ہے کیونکہ بجٹ میں تختہ حساب پیش کرنے اور اخراجات سے واقف کروانے کے بجائے صرف تخصیص کی تفصیلات پیش کرنے پر اکتفاء کیا گیا ہے جبکہ بجٹ میں خرچ اور آمدنی کے علاوہ تخصیص کی تفصیلات پیش کی جانی چاہئے۔ رامچندر راؤ نے کہا کہ تلنگانہ عوام کو حکومت سے جو توقعات تھیں انہیں پورا کرنے کے بجائے حکومت نے عوام سے دھوکہ دہی کی ہے ۔انہوں نے بیرون ملک تعلیم حاصل کر رہے طلبہ کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ جو طلبہ حکومت کی اسکالر شپس و تعلیمی وظائف کے بھروسہ پر بیرون ملک جامعات میں داخلہ حاصل کرتے ہوئے روانہ ہو چکے ہیں لیکن اب تک پریشان ہیں کہ فیس کیسے ادا کریں۔انہوں نے بتایا کہ حکومت کو سال گذشتہ کے بجٹ کی اجرائی اور اخراجات کی مکمل تفصیلات کے ساتھ بجٹ پیش کرنا چاہئے تھا۔بی جے پی رکن قانون ساز کونسل نے کہا کہ حکومت نے عوام اور ایوان کو گمراہ کرنے کی کوشش کی ہے اور ریاست کے تمام طبقات بالخصوص پسماندہ طبقات کو مایوس کیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT