Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / بجٹ سیشن کا 23 فبروری سے آغاز، اپوزیشن تعمیری رول ادا کرے

بجٹ سیشن کا 23 فبروری سے آغاز، اپوزیشن تعمیری رول ادا کرے

کارروائی میں خلل اندازی کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی: مختار عباس نقوی
نوئیڈا ۔ 19 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن سے قبل مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے آج اپوزیشن پارٹیوں سے کہا کہ وہ تعمیر رول ادا کریں انتشاری رول نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کے اندر مباحث، غوروخوض اور فیصلہ سازی کے عمل میں رکاوٹ پیدا کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی۔ اگر اپوزیشن انتشار پسندانہ رویہ اختیار کرتے ہوئے پارلیمانی کارروائی کو درہم برہم کرنے کی کوشش کی تو یہ ٹھیک نہیں ہوگا۔ 23 فبروری سے شروع ہونے والے پارلیمانی بجٹ سیشن میں کئی اہم بلوں کی منظوری کو یقینی بنانے کیلئے اپوزیشن پارٹیوں کا تعاون ضروری ہے۔ امیتی یونیورسٹی لاء اسکول کے ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے مختارعباس نقوی نے کہا کہ کسی بھی جمہوریت میں بحث مباحث ضروری ہوتے ہیں۔ پارلیمنٹ ہی نہایت ہی مؤثر ادارہ ہے جہاں پر عوامی بہبود سے متعلق مسائل کو اٹھایا جاتا ہے اور انہیں حل کیا جاتا ہے۔

پارلیمنٹ میں کارروائی کو روک دینے اپوزیشن کی کوششوں کو ناکام بنایا جائے گا۔ عوامی نمائندوں کو چاہئے کہ وہ اپنا دستوری فرض ادا کریں اور عام آدمی کے توقعات کو پوری کریں۔ مختار عباس نقوی نے کہا کہ پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن میں کئی بلوں کی منظوری کو یقینی بنانا ہے۔ گذشتہ پارلیمانی کارروائی کے دوران اہم بل روک دیئے گئے تھے۔ گذشتہ مانسون اور سرمائی سیشن میں کوئی کام کاج نہیں ہوا۔ راجیہ سبھا کے 73 گھنٹے 7 منٹ ضائع ہوگئے۔ پارلیمنٹ کے بالائی ایوان میں صرف 9 بلوں کو منظوری دی گئی تھی۔ سرمائی سیشن کے دوران پارلیمانی کارروائی کو درہم برہم کرنے سے 56 گھنٹے اور 39 منٹس کا نقصان ہوا جبکہ لوک سبھا میں 8 گھنٹے 37 منٹ کا نقصان ہوا۔ مختار عباس نقوی نے کانگریس اور دیگر اپوزیشن پارٹیوں سے اپیل کی کہ وہ تعمیری رول ادا کریں اور بلوں کی منظوری کیلئے حکومت کی مدد کرے۔ اپوزیشن کو قوم کی خدمت کیلئے ہمیشہ آگے آنا چاہئے۔ تعمیری رول ادا کرنے سے ہی قومی ترقی کو بنایا جاسکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT