Saturday , October 21 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بدعنوانی کے اِنکشاف پر سرپنچ کی غنڈہ گردی

بدعنوانی کے اِنکشاف پر سرپنچ کی غنڈہ گردی

چوری بھی ، سینہ زوری بھی

نائب سرپنچ کا پورا گھرانہ شدید زخمی، بی جے پی اقلیتی قائد پر بھی سلاخوں سے حملہ

کلواکرتی۔ 17 مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) کلواکرتی کے قدیم حلقہ اسمبلی کے گاؤں اور کنڈھ پیٹ میں آج دو گروپوں میں زبردست گھمسان کی لڑائی ہوئی۔ یہ لڑائی گاؤں کے سرپنچ اور نائب سرپنچ کے درمیان رقم کی تفصیلات نہ بتانے اور گاڑیوں سے رقم کی وصولی کو لے کرہوئی۔ تفصیلات کے مطابق اورکنڈھ پیٹ کے سرپنچ کرشنا گوڑ نے 6 ماہ قبل 8 لاکھ روپئے کی قدیم گرام پنچایت کے فنڈ سے نامعلوم طریقے سے حاصل کرتے ہوئے اس کا حساب درج نہیں کیا ۔ نائب سرپنچ چنتماں اور محمد جلال الدین نے RTI کے تحت معلومات حاصل کرتے ہوئے اس 8 لاکھ کی رقم سرپنچ پر غبن کرنے کا الزام عائد کیا۔ اس کے علاوہ اورکنڈھ پیٹ میں پہاڑوں کی کثیر تعداد ہے جہاں سے روزانہ 50 تا 60 ٹریکٹر پتھر دوسرے علاقوں کو سربراہ کیا جاتا ہے۔ ان ٹریکٹروں سے سرپنچ فی ٹریکٹر 200 روپئے وصول کرتے ہیں۔ ان دو غیرقانونی کاموں کی نائب سرپنچ اور محمد جلال الدین نے ضلع کلکٹر اور DPRO سے شکایت کی تھی جس پر برہم ہوکر سرپنچ کرشنا گوڑ اور ان کے چند حواریوں نے رات میں چنتماں نائب سرپنچ کے گھر پر حملہ کیا اور انہیں ڈرا دھمکاکر برے نتائج کی دھمکی دی۔ اس موقع پر توتو میں میں ، دھکم پیل ہوئی جس پر مخالف گروپ نے رات ہی مٹرجیل پولیس اسٹیشن پہنچ کر سرپنچ اور ان کے حواریوں کے خلاف شکایت درج کروائی جب صبح اس کی اطلاع سرپنچ اور ان کے حواریوں کو ملی تو آج دوبارہ صبح تقریباً 9 بجے سرپنچ اور ان کے آدمیوں نے مل کر دوبارہ نائب سرپنچ کے گھر پر حملہ کیا اور شدید مارپیٹ کی جس کے سبب نائب سرپنچ چنتماں اور ان کے شوہر، چنا جنگیا اور ان کے دو بیٹے یادیا، راما سوامی اور ایک بہو یادماں شدید زخمی ہوئے۔ چنتماں کے مطابق سرپنچ اور ان کے آدمیوں نے گھر پر حملہ کرتے ہوئے بغیر کی بات چیت کے ہم تمام گھر والوں پر لاٹھیوں اور سلاخوں سے شدید حملہ کیا اور خوب مارپیٹ کی۔ اس اثناء میں وہ لوگ بی جے پی کے مائناریٹی ضلع جنرل سیکریٹری محمد جلال الدین کے گھر پہنچ کر ان پر بھی حملہ کیا اور بار بار یہ کہہ رہے تھے کہ ان تمام کو راستہ بتانے والا یہی ہے، اس کو اگر ختم کردیا جائے تو پھر دوبارہ کوئی ہمارے نام پر نہیں آئے گا۔ سرپنچ اور ان کے آدمیوں نے پہلے تو جلال الدین کی آنکھوں اور پورے جسم پر مرچ پاوڈر ڈال کر انہیں باہر کھینچتے ہوئے لاٹھیوں اور سلاخوں سے مارپیٹ کی جس کے سبب جلال الدین کے سر میں اور جسم کے دیگر حصوں پر شدید چوٹیں آئیں اور سیدھے ہاتھ دو جگہ سے فریکچر ہوگیا ہے۔ یہ بات گورنمنٹ ہاسپٹل انچارج ڈاکٹر شیوارام نے بتائی جبکہ ان زخمیوں کی عیادت کرنے کے لئے بی جے پی ریاستی جنرل سیکریٹری ٹی آچاری نے دواخانہ پہنچ کر تمام زخمیوں سے ملاقات کی اور ان کی عیادت کی اور میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پولیس جو کوئی بھی اس میں ملوث ہے، ان کے خلاف بغیر کسی دباؤ کے سخت ایکشن لے اور انہیں ان کے حرکتوں کی سزا ضرور دلوائے، ورنہ بی جے پی اس کے خلاف احتجاج پر اتر آئے گی۔ اگر پولیس رات ہی میں ان کے خلاف ایکشن لیتی تو صبح کا یہ واقعہ پیش نہیں آتا تھا۔ ٹی آچاری نے بتایا کہ اس سلسلے میں ان کی ڈی ایس پی سے بھی بات چیت ہوئی ہے اور انہوں نے سخت ایکشن لینے کا تیقن دیا جبکہ پولیس کے مطابق حملہ آوروں کے خلاف درخواست وصول ہونے کے بعد کیس درج کرتے ہوئے کارروائی کرنے کا بتایا گیا۔ اس موقع پر دُرگا پرساد، راگھا ویندر، وجئے کونسلر اور دیگر بی جے پی قائدین موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT