Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / برطانیہ میں سیلاب سے سنگین صورتِ حال

برطانیہ میں سیلاب سے سنگین صورتِ حال

کرسمس کے موقع پر سیاحتی مقامات میں تاریکی
لندن۔ 27 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) حکومت برطانیہ نے شمالی انگلینڈ بشمول تاریخی سیاحتی مقام پارک کے سیلاب کے پانی میں محصور ہوجانے پر ہنگامی مشاورت شروع کردی ہے جبکہ سیلاب کا پانی داخل ہونے پر ہزارہا افراد اپنے مکانات چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔ وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون کی زیرصدارت اجلاس میں امداد اور بچاؤ کے اقدامات پر غوروخوض کیا گیا کیونکہ کرسمس تعطیلات کے موقع پر اچانک سیلاب آجانے سے افراتفری پیدا ہوگئی ہے۔ ملک بھر میں سیلاب کے خطرات سے متعلق بورڈس آویزاں کردیئے گئے ہیں اور ماہر غوطہ خوروں کو ناگہانی صورتِ حال سے نمٹنے کیلئے تیار رکھا گیا ہے۔ سیکریٹری محکمہ ماحولیات لیزٹرس نے بتایا کہ موسلا دھار بارش وہم و گمان سے کہیں زیادہ ہے اور عوام کو مشورہ دیا گیا کہ ایمرجنسی سرویس سے استفادہ کریں تاکہ محفوظ مقامات پر منتقل کیا جاسکے۔ انہوں نے بتایا کہ سیلاب کی صورتِ حال اس قدر سنگین ہوگئی ہے کہ بیشتر مقامات تک پہنچنا ناممکن ہوگیا ہے جبکہ ہزارہا مکینوں کا فوج کے تعاون سے یارک شائر اور لنکا شائر سے تخلیہ کروایا گیا ہے اور گریٹر مانچسٹر میں تقریباً 7,000 مکانات ، برقی سربراہی مسدود ہوجانے سے تاریکی میں گھر گئے ہیں۔ برطانیہ کا مشہور سیاحتی مقام یارک میں بھی اندھیرا چھا گیا ہے جہاں پر 800 سالہ قدیم کھینڈارلس (چرچ) واقع ہے۔

TOPPOPULARRECENT