Tuesday , October 24 2017
Home / ہندوستان / برطرف کردینے عآپ کو مشرا کا چیلنج

برطرف کردینے عآپ کو مشرا کا چیلنج

جین کا مشرا پر ہتک عزت دعویٰ کا اعلان ، مہیلا کانگریس کا احتجاجی مظاہرہ
نئی دہلی ۔8مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) عام آدمی پارٹی کے معطل قائد کپل مشرا نے آج پارٹی کو چیلنج کیا کہ وہ اُنھیں برطرف کرکے دکھائے ۔ دریں اثناء انھوں نے چیف منسٹر اروند کجریوال پر تازہ الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ اُن کے برادر نسبتی کیلئے پچاس کروڑ روپئے کے ایک سودے کا اہتمام کیا گیا تھا۔ پارٹی کی ابتدائی رکنیت سے معطل کرنے کے دن مشرا نے کہا کہ دس کروڑ روپئے کا ایک جعلی بل کجریوال کے برادر نسبتی کے حق میں تیار کیا گیا ۔ مشرا کو ہفتہ کے دن وزارت سے ہٹادیا گیا تھا۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ پنجاب انتخابات میں ووٹوں کی تقسیم میں پارٹی نے بھاری کرپشن کیا۔ پارٹی ارکان کی جانب سے شراب تک فراہم کی گئی تھی ۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ پارٹی قائد سنجے سنگھ بیرون ملک سے پارٹی کیلئے مالیہ حاصل کرنے کی مہم میں ملوث ہیں۔ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مشرا نے کہاکہ وہ عام آدمی پارٹی سے ترک تعلق کبھی نہیں کریں گے اور بی جے پی میں عمر بھر کبھی شمولیت اختیار نہیں کریں گے ۔ انھوں نے دعویٰ کیا کہ چونکہ انھوں نے کجریوال پر الزامات عائد کئے ہیں ، انھیں اُن کے حامیوں کی جانب سے ہلاک کردینے کی دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ انھوں نے کجریوال پر الزام عائد کیا کہ وہ اقتدار کے بھوکے ہیں اور چیف منسٹر کے عہدہ سے استعفیٰ دینا نہیں چاہتے۔ قبل ازیں دن میں اُنھوں نے اعلان کیا تھا کہ وہ اے سی بی کو ٹینکرس اسکام کے بارے میں تمام ثبوت فراہم کرچکے ہیں۔ یہ ٹینکرس اسکام اُس مدت کا ہے جب کہ شیلا ڈکشٹ چیف منسٹر تھیں۔ مشرا نے کہاکہ وہ اے سی بی عہدیداروں سے کہہ چکے ہیں کہ کجریوال اور اُن کے دو قریبی ساتھیوں نے ٹینکر اسکام کی تحقیقات کو متاثر کیا تھا ۔ اُن کی حکومت بار بار شیلا ڈکشٹ کو تحفظ فراہم کررہی تھی ۔ انھوں نے کہاکہ اے سی بی تفصیلی تحقیقات کے سلسلے میں بار بار اُنھیں طلب کرے گی ۔ 400 کروڑ روپئے کا ٹینکر اسکام مبینہ طورپر خانگی ٹینکرس سربراہی آب کے لئے کرایہ پر حاصل کرنے کے بارے میں بے قاعدگیوں سے متعلق ہے۔ دریں اثناء پارٹی کے سینئر قائد ستندر جین نے اعلان کیا کہ پارٹی کے معطل قائد کپل شرما نے اُن پر کرپشن کے بے بنیاد الزامات عائد کئے ہیں، کیونکہ وہ دہلی کے ایک وزیر سے قربت رکھتے تھے ۔ انھوں نے اعلان کیا کہ وہ اس سلسلے میں ہتک عزت کا دعویٰ دائر کریں گے ۔ دریں اثناء کانگریس کے شعبۂ خواتین کی کئی کارکنوں نے آج بطور احتجاج چیف منسٹر اروند کجریوال کی قیامگاہ کے قریب احتجاجی جلوس نکالا اور اُن سے استعفیٰ کا مطالبہ کیا ، کیونکہ اُن پر برطرف وزیر کپل مشرا نے الزامات عائد کئے ہیں۔ کارکن عام آدمی پارٹی حکومت اور کجریوال کے خلاف نعرہ بازی کررہی تھیں۔ انھوں نے جلوس کی شکل میں کجریوال کی قیامگاہ تک جانے کا منصوبہ بنایا تھا لیکن پولیس نے اُنھیں روک دیا ۔ دریں اثناء اروند کجریوال نے کہاکہ صداقت غالب آئے گی اور اس کا آغاز آئندہ دہلی اسمبلی کے آئندہ اجلاس سے ہوجائے گا ۔ وہ مشرا کی پریس کانفرنس پر اپنے ردعمل کا اظہار کررہے تھے ۔ انھوں نے آج مشرا کو ابتدائی رکنیت سے معطل کردیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT