Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / برقی کنٹراکٹ ملازمین کو باقاعدہ بنانے کا مطالبہ

برقی کنٹراکٹ ملازمین کو باقاعدہ بنانے کا مطالبہ

احتجاج شروع کرنے کی دھمکی ، یونین قائدین کا بیان
حیدرآباد ۔ 22 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : محکمہ برقی تلنگانہ کے کنٹراکٹ اور آوٹ سورسنگ ملازمین نے احتجاجی دھرنا ، بھوک ہڑتال کرتے ہوئے ان کی ملازمتوں کو باقاعدہ بنانے کا مطالبہ کیا ۔ انہوں نے مطالبات کی عدم یکسوئی پر منظم احتجاج کی دھمکی دی ۔ یونین قائدین کشور راج ، ورون ، محمد وہاب نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور ریاستی وزیر برقی نے کنٹراکٹ آوٹ سورسنگ ملازمین کو باقاعدہ بنانے کا وعدہ کیا تھا تاہم ڈھائی سال گذر چکے کوئی اقدام نہیں اٹھایا گیا ۔ ان قائدین نے کہا اس سلسلہ میں ریاستی حکومت سے بارہا نمائندگی کی گئی ہے ۔ تاہم بے سود رہی ۔ کنٹراکٹ ملازمین کو انشورنس وغیرہ کی سہولتیں بھی میسر نہیں ہیں ۔ اسٹاف ناکافی ہے کنٹراکٹ اسٹاف کو سیفٹی کٹس فراہم نہیں کئے جاتے ۔ حکومت تلنگانہ کے رویہ سے کنٹراکٹ ملازمین بدظن ہوچکے ہیں انہوں نے بتایا کنٹراکٹ آوٹ سورسنگ ملازمین کی تعداد 20 ہزار ہے ۔ جب کہ کنٹراکٹ ملازمین یونین کے ارکان 5 روز سے بھوک ہڑتال پر ہے ۔ تلنگانہ الیکٹرسٹی کنٹراکٹ اور آوٹ سورسنگ ملازمین کے ٹریڈ یونین قائدین کی تعداد جو 30 ارکان پر مشتمل ہیں ایس ای آفس اوپل کے روبرو زیر التواء مطالبات کی یکسوئی اور کنٹراکٹ ملازمین کو مستقل بنانے کے مطالبے کے تحت گذشتہ پانچ روز سے ہڑتال پر ہیں ۔ یونین کے دیگر قائدین میں راجو ، جناردھن ، وینکنا ، سریکانت وغیرہ شامل ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT