Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / برکینافاسو کی ترُک ہوٹل پر دہشت گرد حملہ ، 18 ہلاک

برکینافاسو کی ترُک ہوٹل پر دہشت گرد حملہ ، 18 ہلاک

سکیورٹی فورسیس کی جوابی کارروائی میں دو حملہ آوروں کو ماردیا گیا، کئی گاہک زخمی
اواگاڈوگو ۔14 اگسٹ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) برکینافاسو کے دارالحکومت میں ان مشتبہ جہادیوں کے خلاف سکیورٹی فورسیس کی کارروائی مکمل ہوگئی جنھوں نے ایک دہشت گرد حملے میں ایک ریسٹورنٹ کو فائرنگ کا نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجہ میں 18 افراد ہلاک اور دیگر کئی زخمی ہوگئے تھے ۔ وزیر مواصلات ریمیس ڈانڈ جنھوں نے کہاکہ بیرونی شہریوں کی پسندیدہ ترک ہوٹل پر یہ حملہ اتوار کی شب شروع ہوا تھا جس میں پولیس نے اپنی کارروائی کے دوران دو حملہ آوروں کو گولی مارکر ہلاک کردیا اور ایک درجن افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ اس حملے میں ملوث بندوق برداروں کی تعداد ہنوز واضح نہیں ہوسکی ۔ ڈانڈ جینو نے مزید کہاکہ ’’(سکیورٹی فورسیس کی ) کارروائی ختم ہوچکی ہے لیکن دارالحکومت اواگاڈوگو اور ریسٹورنٹ کے اطراف کے علاقوں میں تلاش جاری ہے ۔ استنبول ریسٹورنٹ اس ہوٹل سے صرف 200 کیلومیٹر دور ہے جس کو جنوری 2016 ء میں دہشت گرد حملے کا نشانہ بنایا گیا تھا جس کے نتیجہ میں 30 افراد ہلاک اور 71 زخمی ہوگئے تھے ۔ ان میں بیرونی شہریوں کی اکثریت تھی جس کی ذمہ داری اسلامی مغرب کے القاعدہ یونٹ نے قبول کی تھی ۔ ایک پولیس آفیسر نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر ایایف پی سے کہا کہ عینی شاہدین کے مطابق ’’کم سے کم دو حملہ آور جو کلاشنکوف سے لیس تھے رات 9 بجے ایک موٹر سیکل پر پہونچے اور استنبول ریسٹورنٹ پر فائرنگ شروع کردی ‘‘ ۔ لیکن ایک ویٹر نے کہاکہ اُس نے دیکھا کہ ’’تین مسلح افراد تقریباً 9:30 بجے شب 4×4 گاڑی میں پہونچے اور گاڑی سے اُترکر ٹریس پر بیٹھے گاہکوں پر فائرنگ شروع کردی‘‘۔

TOPPOPULARRECENT