Thursday , August 17 2017
Home / دنیا / برہمپترا آبی تقسیم کیلئے چین، ہند ۔ بنگلہ دیش میکانزم کا خواہاں

برہمپترا آبی تقسیم کیلئے چین، ہند ۔ بنگلہ دیش میکانزم کا خواہاں

بیجنگ ۔ 10 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) چین نے ان رپورٹس کو مسترد کردیا ہے جہاں یہ کہا جارہا تھا کہ وہ بھی دریائے برہمپترا کی ایک معاون ندی کو مسدود کرتے ہوئے ہندوپاک کے ساتھ پانی کی  جنگ میں شامل ہوگیا ہے۔ دریں اثناء چین کے سرکاری میڈیا نے بتایا کہ چین پانی کی تقسیم کیلئے ہندوستان اور بنگلہ دیش کے ساتھ ہمہ جہتی تعاون کے میکانزم یں شمولیت کیلئے تیار ہے۔ گلوبل ٹائمز میں شائع ہوئے ایک مضمون میں کہا گیا ہیکہ چین اور ہندوستان کے تعلقات ’’تخیلی آبی جنگ‘‘ سے متاثر نہیں ہونے چاہئے جبکہ چین دریائے برہمپترا کے پانی کو بطور ہتھیار استعمال کرنے کا کوئی ارادہ نہیں رکھتا۔ مضمون میں یہ بھی کہا گیا ہیکہ چین، ہندوستان اور بنگلہ دیش کے ساتھ پانی کی تقسیم کیلئے ہمہ جہتی تعاون کیلئے تیار ہے۔ اس تجویز کو اہمیت کا حامل اس لئے سمجھا جارہا ہے کیونکہ دریاؤں کے پانی کی تقسیم کیلئے چین کا ہندوستان کے ساتھ کوئی معاہدہ نہیں ہے۔ ہندوستانی عوام کی برہمی اپنی جگہ بجا ہے کیونکہ جب وہ یہ پڑھتے ہیں کہ چین نے دریائے برہمپترا کی ایک ایک معاون ندی کو مسدود کردیا ہے جبکہ حقیقت یہ ہیکہ دریائے برہمپترا جنوب مغربی چین میں تبت کے خودمختار خطہ سے شروع ہوکر ہندوستان نے شمال مشرقی علاقہ آسام اور اس کے بعد بنگلہ دیش میں داخل ہوجاتا ہے جو ان تمام خطوں کیلئے ایک اہم آبی وسیلہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT