Tuesday , September 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بزم تنویر ادب کے مشاعروں کو قومی سطح پر مقبولیت کا اعزاز

بزم تنویر ادب کے مشاعروں کو قومی سطح پر مقبولیت کا اعزاز

دیگلور میں کل ہند مشاعرہ کا کامیاب انعقاد، ڈاکٹر نواز دیوبندی، قاضی حامد تنویر و دیگر کا خطاب
دیگلور۔7 فبروری (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) بزم تنویر ادب ایجوکیشنل ویلفیر کلچرل رجسٹرڈ سوسائٹی دیگلور اور میونسپل کونسل (مجلس بلدیہ) دیگلور کی مشترکہ اعانت سے کل ہند 16 ویں ادبی مشاعرہ کا کامیاب انعقاد عمل میں آیا۔ درگاہ حضرت سید شاہ ضیاء الدین رفاعیؒ کے وسیع و عریض نیاز میدان میں رات بھر جاری رہنے والے اس مشاعرے میں سردی کے باوجود ہزارہا سخن کے شیدائی سامعین نے ہمہ تن گوش شعراء کو سماعت کیا۔ اترپردیش اردو اکیڈیمی کے صدر ڈاکٹر نواز دیوبندی نے اپنے صدارتی خطبہ میں دیگلور ضلع ناندیڑ (مہاراشٹرا) کے عوام سخن فہمی کا کافی ستائش کی جس طرح شعراء کے عمدہ کلام کی حفاظت کرتے ہیں یہ درد آفرین و قابل دید شعراء کی ہمت افزائی پر زور دیا۔ خود صدر مشاعرہ کے نعتیہ کلام ہدیتاً پیش کرنے کے ساتھ اور صدر بلدیہ شریمتی اجولہ لکشمی کانت پدم وار نے شمع روشن کرکے باضابطہ افتتاح کا اعلان کیا۔ مسٹر لکشمی کانت پدم وار کار گزار صدر راشٹروادی کانگریس پارٹی نے خطاب کے دوران بزرگ قائد مجاہد آزادی حضرت قاضی حامد تنویرؒ جن کے نام سے بزم رجسٹرڈ ہے اور ادبی امور انجام دیتی ہے کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ دیگلور میں ابتداء ہی سے حضرت سید شاہ ضیاء الدین رفاعیؒ درگاہ شریف، ڈھونڈا مہاراج سیٹھ استھان، مستان شاہ ولیؒ ، چڑامنی مہاراج مٹھ استحصان یہ دیگلور کے قومی یکجہتی اور فروغ انسانی کے مراکز ہیں جہاں مانتی ہے دیگلور میں قومی یکجہتی کو کافی فروغ حاصل ہورہا ہے۔ تعصب سے پاک یہ شہر امن کا گہوارہ سارے ملک کے ممتاز شعراء یہاں کی تعریف ہرجگہ کرتے ہیں کہا۔ مشاعرہ کے آغاز سے قبل نشست کی صدارت ونالی (دیگلور) گردوارہ کے بانی بابا جوگیندر سنگھ نے کی۔ دیگلور کے عوام کو قومی یکجہتی کے علمبردار قوم قرار دیا۔ تمام مہمانان، خصوصی شعرائے اکرام کی گلپوشی کی گئی۔ بزم تنویر ادب کے سکریٹری جو خود بھی شاعر ہیں جناب سید قاسم ساجد (انجینئر) کے پہلے نعتیہ مجموعہ کلامؒ مقام محمد صلعم‘‘ کا رسم اجراء ڈاکٹر نواز دیوبندی نے انجام دیا۔ بزم کے صدر قاضی امداد علی، کنوینر قاضی سید لایق علی نعمانی موجود تھے۔ یہاں پر ہر سال غریب مجبور مریضوں کے لئے ہزارہا روپیوں پر خرچ پر مشتمل میڈیکل آپریشن کیمپ مجاہد آزادی قاضی سید حامد تنویر و چار منچ (رجسٹرڈ ٹرسٹ) کی جانب سے مفت منعقد کیا جاتا ہے۔ اس عظیم الشان مشاعرہ میں مسٹر سبھاش سابنے ایم ایل اے حلقہ اسمبلی دیگلور کی جانب سے فری میگا کارڈیالوجیکل کیمپ میں خدمات انجام دینے والے تمام فزیشینس، سرجنس کو مومنٹوز پیش کرتے ہوئے تہنیت پیش کی گئی۔ ڈاکٹر شیخ مجیب احمد نے فرداً فرداً ڈاکٹرس کو اسٹیج پر مدعو کیا۔ صدر بلدیہ شریمتی اجولہ پدم واد نائب صدر بلدیہ مسٹر اویناش نیلم وار کے ہاتھوں تہنیت دی گئی۔ مجاہد آزادی قاضی سید حامد تنویرؒ وچار منچ کی جانب سے ہر سال کی طرح یہاں پر تاریخی کیلنڈر کی رسم اجرائی عمل میں آئی۔ اس مشاعرہ کا افتتاح مسٹر سبھاش سابنے (ایم ایل اے) کرنے والے تھے تاہم سرکاری میٹنگ اچانک اونر گآباد میں طے ہونے کے باعث وہ مجبوراً نہ آسکے۔ ان کا روانہ کردہ مراسلہ مسٹر قاضی انصار علی ارمان نے پڑھ کر سنایا۔ ڈاکٹر عبدالمجید نے مشاعرے میں کثیر ہجوم سے خطاب کے دوران قاضی حامد تنویر وچار منچ، بزم تنویر ادب کی کارکردگی فلاحی خدمات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ عنقریب وچار منچ کی جانب سے غریب و یتیم لڑکیوں کی شادیوں کی تقاریب بھی اسی طرح سے مفت خدمات اعانت کے ذریعہ انجام دینے کا اعلان کیا اور چیف آفیسر بلدیہ مسٹر رام داس پٹیل کا بھی شکریہ ادا کیا۔ ملک کے ممتاز شعرائے اکرام میں محترمہ زینت احسان قریشی، نکہت امروہی، شائستہ صبا خانم، راغیب بیاولی، الطاف ضیاء نعیم راشد، تمیم نظام آبادی، جمیل نظام آبادی، حامد بھساولی، افضل منگلوری، اشفاق نظامی مارلوی، فیروز رشید، عبدالرحمن صدیقی، حسن کاظمی، اشفاق اصفی، ڈاکٹر نواز دیوبندی، منصف سیشن جج موظف تیواری اکیلا وغیرہ نے صبح صادق تک ادبی، نصیحتیں کلام سے مشاعرہ تنشگان کی ہر طرح سے پذیرائی کلام کی۔ جسے ہر مذہب و ملت کے لوگوں نے کافی ستائش کی۔ اس مشاعرہ میں چیف آفیسر رام داس پٹیل کی بھی محنت کے تعلق سے تعریف کی گئی۔ یہاں یہ بات بے محل نہ ہوگی کہ بزم تنویر ادب کی جانب سے منعقد کئے جانے والے کل ہند ادبی مشاعرے اب مراٹھواڑہ علاقہ کی حد تک ہی نہیں بلکہ کل ہند پیمانہ پر اپنی شناخت بنواچکے ہیں۔ ان مشاعروں کی خوبی یہ ہے کہ یہ ہندومسلم قومی اتحاد و بھائی چارہ پر مبنی ثابت ہورہے ہیں۔ ان مشاعروں میں جہاں مسلم زعماء حصہ لیتے ہیں اس سے بھی بڑھ چڑھ کر غیر مسلم رہنما، کونسلرس، زیڈ پی ممبرس، ان مشاعروں کو کامیابی سے ہمکنار کرنے میں دامے درہمے سخنے اپنی خدمات سمجھ کر انجام دے رہے ہیں۔ بزم تنویر ادب کے صدر قاضی سید امداد علی، سکریٹری سید قاسم انجینئر، کنوینر قاضی سید لائق علی نعمانی، مسٹر آصف الدین پٹیل راون گاونکر، شیخ رسول، شیخ شریف ماموں (تمام کونسلرس) نثار احمد دیشمکھ (سماجی کارکن)، سید محمود میاں سیٹھ، سید حبیب اللہ قادری، سراج دیسائی، لیاقت علی، اسحق سیٹھ نے مشاعرہ کو کیامیاب بنانے میں کافی محنت کی۔ صدر استقبالیہ لکشمی کانت پدم وار، نائب صدر بلدیہ مسٹر اوی ناش نیلم وار، ایوب سیٹھ عمودی، عبدالجلیل سیٹھ، شیخ محمد صاحب (سابق رجسٹرار) شیواجی دیشمکھ، رمیش دیشمکھ سلونی کر (سابق نائب صدر ضلع پریشد) سبھاش دیشپانڈے سانگوی کر، مسٹر راجو پٹیل، سنیل ایشم وار (کونسلرس) سید محی الدین، وکرم سبھاش سانبے اور شیوسینا کے ضلع نائب صدر مسٹر مہیش پٹیل کے علاوہ دیگر معزز اصحاب وغیرہ کی کثیر تعداد صبح تک حاضر تھی۔

TOPPOPULARRECENT