Wednesday , August 23 2017
Home / ہندوستان / بغیر اجازت ایکتا ریالی نکالنے سے قبل ہردیک پٹیل محروس

بغیر اجازت ایکتا ریالی نکالنے سے قبل ہردیک پٹیل محروس

گجرات میں افواہوں کی روک تھام کیلئے موبائیل انٹرنیٹ سرویس پر پابندی
احمدآباد 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) پولیس نے آج پٹیل برادری تحریک تحفظات کے لیڈر ہردیک پٹیل اور دیگر 35 حامیوں کو قبل ازوقت اجازت حاصل کئے بغیر ’’ایکتا یاترا‘‘ نکالنے کی کوشش پر علاقہ ورچا سے حراست میں لے لیا۔ سورت کے پولیس کمشنر راکیش استھانہ نے بتایا کہ آج کی ریالی کے پیش نظر ہردیک پٹیل اور دیگر 35 حامیوں کو علاقہ ورچا کے منگدھ چوک میں محروس کردیا گیا کیوں کہ سرکاری انتظامیہ سے بغیر اجازت ریالی نکالنے سے امن و قانون کا مسئلہ پیدا ہوسکتا تھا۔ حراست میں لئے جانے کے بعد ہردیک اور ان کے ساتھیوں کو پولیس ہیڈکوارٹر منتقل کردیا گیا۔ پولیس کارروائی کی مذمت کرتے ہوئے 22 سالہ شعلہ بیان لیڈر نے کہاکہ حکومت گجرات ہماری آواز کچل دینا چاہتی ہے اور وہ ہمیں ہراساں و پریشان کررہے ہیں۔ حکومت گجرات اور ریاستی پولیس تشدد بھڑکانے کی کوشش میں ہے جوکہ جمہوریت کی روح کے مغائر ہے۔ ہردیک پٹیل نے دنڈی سے احمدآباد تک پدیاترا کی اجازت دینے سے انکار کے بعد کل تک ایکتا یاترا کے منصوبہ کو ظاہر نہیں کیا تھا۔ تاہم آج صبح ہردیک پٹیل کے ایک رفیق کار اور کنوینر پاٹیدار امانت اندولن کمیٹی الپیش کھتریہ نے سورت میں اچانک یہ اعلان کیاکہ علاقہ ورچا میں مگندھ چوک سے ایک ریالی نکالی جائے گی۔ واضح رہے کہ ہردیک پٹیل گجرات میں پٹیل برادری کے ایک سرگرم لیڈر بن کر اُبھرے ہیں جنھوں نے دیگر پسماندہ طبقات کے تحت پٹیل برادری کے لئے تحفظات کے مطالبہ پر احتجاجی تحریک شروع کردی ہے۔ گزشتہ دو ہفتوں کے دوران 2 مرتبہ ’’الٹی دنڈی یاترا‘‘ نکالنے کا اعلان کیا تھا لیکن نوسری ضلع انتظامیہ کی جانب سے اجازت سے انکار پر منسوخ کردینا پڑا جبکہ احمدآباد شہر میں 25 اگسٹ کو پٹیل برادری کے احتجاجی مظاہرے کے دوران تشدد پھوٹ پڑنے سے 10 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT