Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / بلدیات ورنگل، کھمم اور گرام پنچایت اچم پیٹ پر بھی گلابی جھنڈا لہرایا

بلدیات ورنگل، کھمم اور گرام پنچایت اچم پیٹ پر بھی گلابی جھنڈا لہرایا

ٹی آر ایس کی تاریخ ساز کامیابیوں کا سلسلہ جاری، ورنگل میں کانگریس کو صرف 4اور کھمم میں 10نشستیں ، تلگودیشم کا عملاً صفایا
ورنگل؍ کھمم۔/9مارچ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) گریٹر ورنگل میونسپل کارپوریشن انتخابات میں حکمران ٹی آر ایس جماعت کی زبردست کامیابی ، اپوزیشن پارٹیوں کو بری طرح ناکامی ہوئی۔ گریٹر ورنگل کے 58بلدی ڈیویژن میں 44پر ٹی آر ایس پارٹی امیدواروں نے کامیابی حاصل کی جبکہ اس پارٹی کے باقی 8آزاد امیدواروں نے بھی کامیابی حاصل کی، کانگریس پارٹی کے4، سی پی آئی ایم ایک، بی جے پی کے ایک امیدوار نے کامیابی حاصل کی۔ ورنگل زرعی مارکٹ میں صبح 8 بجے سے ووٹوں کی گنتی کا آغاز ہوا۔ کارپوریشن حدود میں جملہ 6 لاکھ 44ہزار 196 ووٹروں کی تعداد میں سے 58 ڈیویژن میں 3لاکھ 87ہزار 725ووٹروں نے اپنے حق رائے دہی کا استعمال کیا تھا۔ ٹی آر ایس کی جانب سے پانچمسلم امیدواروں کو میدان میں اتارا تھا جن میں سے 4 نے کامیابی حاصل کی۔

ڈیویژن نمبر 41 سے محمد سراج الدین نے اپنے حریف آزاد امیدوار کے پربھاکر کو 765 کی اکثریت سے شکست دی۔ محمد سراج الدین کو 2728 ووٹ حاصل ہوئے جبکہ پربھاکر کو 1963ووٹ حاصل ہوئے۔ ڈیویژن نمبر 36 درگاہ قاضی پیٹ سے ٹی آر ایس امیدوار محمد ابوبکر نے بی جے پی امیدوار رام لنگم کو 1964 ووٹوں کی اکثریت سے شکست دی۔ ابوبکر ٹی آر ایس نے 2803ووٹ حاصل کئے جبکہ بی جے پی نے 839 ووٹ حاصل کئے۔ کانگریس امیدوار تیسرے مقام پر رہے۔ ڈیویژن نمبر 31سے ٹی آر ایس امیدوار صوبیہ صباحت نے کانگریس امیدوار ٹوٹا وجیا پر 78ووٹوں کی اکثریت سے کامیابی حاصل کی۔ صوبیہ نے 2799 ووٹ حاصل کئے۔ جبکہ کانگریس امیدوار 2721، بی جے پی کی رما دیوی نے 1126حاصل کئے۔ بلدی ڈیویژن 25 سے ٹی آر ایس امیدوارہ صادقہ شمیم ( زوجہ سید مسعود ) نے ٹی آر ایس کے باقی آزاد امیدواروں جیاسری کو 1249ووٹوں کی اکثریت سے شکست دی۔ کانگریس امیدوارہ راحت پروین نے 731 ووٹ حاصل کئے جبکہ کامیاب امیدوارہ صادقہ شمیم 2639 اور آزاد امیدوار 1390 ووٹ حاصل کئے۔ شہر کے اہم علاقہ ایل بی نگر سے ٹی آر ایس امیدوارہ منور النساء کو آزاد امیدوارہ شاردھا جوشی نے 733 ووٹوں سے شکست دی۔ پولنگ کے دوران امیدواروں کے شوہروں کے بیچ جھگڑا ہوا تھا۔ منورالنساء کو مسلم علاقوں سے ہی کم ووٹ ملے جبکہ شاردھا جوشی کو مسلم حلقوں میں زیادہ ووٹ ملے ہیں۔ محمد سراج الدین نے 41ڈیویژن سے تاریخ ساز کامیابی حاصل کی۔ اس حلقہ میں صرف 12فیصدی مسلم ووٹ ہیں لیکن انہیں مقامی ایم ایل اے ڈی ونئے بھاسکر کی بھرپور تائید حاصل رہی۔ اس علاقہ میں ٹی آر ایس کے تقریباً بڑے لیڈروں ٹی ہریش راؤ، کے ٹی آر، ڈپٹی چیف منسٹروں کے سری ہری، محمد محمود علی، وزیر داخلہ نرسمہا ریڈی، ارکان پارلیمنٹ و دیگر نے انتخابی مہم میں حصہ لیا۔

ووٹوں کی گنتی کے مراکز پر پولیس کی جانب سے زبردست احتیاطی اقدامات کئے گئے تھے۔ آزاد امیدواروں نے دوبارہ ٹی آر ایس میں شامل ہونے کا اعلان کیا۔ ہنمکنڈہ کے تین مسلم امیدواروں کو کامیابی دلانے میں مقامی ایم ایل اے ڈی ونئے بھاسکر نے اہم کردار ادا کیا۔کھمم کارپوریشن میں ٹی آرایس پارٹی نے بڑی بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل کی ہے، کھمم میں مکمل 50ڈیویژنوں میں سے 34 مقامات پر اپنی جیت حاصل کر کے کھمم کارپوریشن میں اپنا مقام بنایا۔ اسی طرح ٹی آر ایس نے 34 سیٹ ، کانگریس پارٹی نے 10 ، وائی ایس آر نے 2، سی پی آئی نے 2،سی پی ایم نے 2سیٹس حاصل کئے، کانگریس نے 18, 27, 31, 36, 37, 39, 41, 42, 44, 46ڈیویزنوں میں اپنی کامیابی حاصل کی،  سی۔پی۔آئی نے 28, 50 ڈیویژنوں میں کامیابی حاصل کی۔

سی۔پی۔ایم نے 30,43ڈیویژن میں اپنی کامیابی حاصل کی، اور وائی ایس آر نے 4,34ڈیویژنوں میں اپنی کا میابی حاصل کی، باقی سب ڈیویژنوں میں ٹی۔آر۔ایس نے اپنی کامیابی کو یقینی بنایا،کھمم کار پوریشن حلقہ میں کل 50 ڈیویژن ہیں جس میں سے 4مسلمانوں نے کامیابی حاصل کی، جن میں سے 3ٹی۔آر۔ایس پارٹی سے کامیابی حاصل کی،1سی۔پی۔آئی پارٹی سے جیت کر اپنا مقام حاصل کیا، اس موقع سے کھمم کارپوریشن کے پہلے مئیرکی حیثیت سے ڈاکٹر جی پاپا لال ، اور ڈپٹی مئیر کی حیثیت سے 29ڈیویژن کے کار پوریٹر محمدشوکت کی امید کی جارہی ہے۔ ناگرکرنول ڈویژن اچم پیٹ نگرپنچایت   جملہ 20  وارڈکے  لئے اس ماہ کے  6 تاریخ کو منعقد ہوئے انتخابات کے  لئے آج کی گئی رائے شماری میں  ٹی آر ایس نے جملہ 20 وارڈوں میں اکثریت سے جیت حاصل کرتے ہوئے ٹی آر ایس کے ساریے امید وارں کو ہرانے کے لئے کانگریس ، تلگو دیشم اور بی جے پی کے زیر اہتمام تشکیل کردہ عظیم اتحاد کو شکست دیدی۔ تفصیلات کے مطابق آج صبح  8 بجے سے ریٹرننگ آفیسر آرڈی او ناگرکرنول مسٹر دیویندرریڈی کی زیر نگرانی ہوئے رائے شماری کی گئی ۔

TOPPOPULARRECENT