Monday , June 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بلدیہ کیلئے مختص بجٹ کے خرچ کیلئے ہنوز کوئی فیصلہ نہیں

بلدیہ کیلئے مختص بجٹ کے خرچ کیلئے ہنوز کوئی فیصلہ نہیں

کریم نگر میں پبلک ہیلت شعبہ کو دی گئی منظوری کے احکامات بھی ملتوی
کریم نگر۔/9مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی حکومت نے 2016-17 میں مختص کردہ بجٹ ایک سو کروڑ فنڈ کس طرح سے کس کے ذریعہ خرچ کیا جائے اس تعلق سے ابھی کوئی فیصلہ نہیںہورپایا ہے کہ سال گزشتہ فنڈز مختص و اجرائی کیلئے مجلس بلدیہ ایک مبسوط تخمینہ مسودہ حکومت کو بھیجا تھا اس کیا منطوری دیتے ہوئے تین ماہ قبل کارپوریشن کو دیئے جانے والے 100 کروڑ پبلک ہیلت شعبہ کو دیئے جانے کی منظوری دیتے ہوئے احکامات جاری کردیئے لیکن پبلک ہیلت اے ایس سی کو علحدہ احکامات نہ دیتے ہوئے اسے بھی ملتوی رکھا ہے۔ کارپوریشن کو مختص کردہ فنڈز پبلک ہیلت کے ذریعہ خرچ کرنے کہا جائے۔ برسر اقتدار کارپوریٹرس مطمئن نہیں ہیں۔ متحدہ ضلع کریم نگر رام گنڈم کارپوریشن کے برسر اقتدار کارپوریٹرس انتظامیہ ایک اجلاس منعقد کرتے ہوئے منظورہ 100 کروڑ فنڈز کے تمام ترقیاتی کام کارپوریٹرس کی منظوری سے کروائے جانے کی قرارداد منظور کی گئی اور حکومت کو بھی روانہ کی گئی ۔ ریاستی وزراء اور دیگر اجلاسوں میں اس فنڈز کے اختیارات پر بحث و مباحثہ حکومت میونسپل انتظامیہ کے ذریعہ خرچ کی جانے کی منظوری دی وعدہ کیا۔ لیکن تاحال کسی بھی قسم کا عمل فیصلہ کے بارے میں کوئی ہدایت ، حکم نہیں دیا گیا۔ پبلک ہیلت میں فی الحال عملہ بہت کم ہے اور مشن بھگیرتا کے کاموں میں مصروف ہے۔ حکومت کے جاری کئے جانے والے 100 کروڑ کے کاموں کی تکمیل تلوار کی دھار پر چلنے کا معاملہ ہوگا۔ کارپوریشن میں کئی انجینئرس ورک انسپکٹرس موجود ہیں اور یہ ملازمین عہدیداروں پر کوئی دباؤ کا کام بھی نہیں ہے اس لئے ترقیاتی کاموں کی انجام دہی معیاری اور بروقت کروانے کیلئے آسانی ہوگی کہا جارہا ہے۔ سب سے اہم یہ ہے کہ کارپوریشن عملہ کاموں کے کروانے کیلئے منتظر ہے۔ کارپوریشن کیلئے دیئے جانے والے فنڈز منظوری میونسپل کے ذریعہ کے بجائے پبلک ہیلت کے ذریعہ کروانے کی سوچ ہی غلط ہے جو کہ حکومت کے ذریعہ احکامات کی اجرائی عمل میں لانے سے فنڈس مختص کرنے کے بعد بھی کاموں کی انجام دہی میں تاخیر ہورہی ہے اور یہ معاملہ درمیان میں ہی رک گیا۔ کارپوریٹرس کا کہنا ہے کہ میونسپل حدود میں کام میونسپل کے ذریعہ کروائے جانے چاہیئے تاکہ ہمیں بھی اس کی جانچ اورتنقیح کا اختیار حاصل ہو۔ اگر یہ کام پبلک ہیلت کے ذریعہ کروائے جائیں گے تو ہم کاموں کے معیار کی جانچ نہیں کرسکتے ، ہمارا کوئی واسطہ ہی نہیں رہتا۔ کارپوریٹرس اعتراض کررہے ہیں۔ حکومت کو چاہیئے کہ سوچ کر فیصلہ کرے تاکہ 100 کروڑ فنڈز میں بدعنوانی نہ ہونے پائے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT