Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / بلدی انتخابات کیلئے اتوار کو اعلامیہ کی اجرائی متوقع

بلدی انتخابات کیلئے اتوار کو اعلامیہ کی اجرائی متوقع

چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ کے فارم ہاؤز میں’’چنڈی یگنم‘‘ کا آغاز
حیدرآباد 23 ڈسمبر (سیاست نیوز) بلدیہ کے مجوزہ انتخابات کیلئے 27 ڈسمبر کو اعلامیہ کی اجرائی متوقع ہے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاعات کے بموجب چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ کی پانچ روزہ پوجا ’چنڈی یگنم‘ کے اختتام کے بعد ہی اعلامیہ کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ 3 ہزار سے زائد پجاریوں کی موجودگی میں کروائے جارہے اِس یگنم کے اختتام پر چیف منسٹر کی جانب سے شہر و ریاست کی ترقی کے متعلق منصوبے کا اعلان کیا جائے گا اور اِن اعلانات کے بعد ہی مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے انتخابات کیلئے شیڈول و اعلامیہ کی اجرائی عمل میں آئے گی۔ ڈسمبر کے آخری ہفتہ کو انتہائی اہم اور نیک شگون تصور کیا جارہا ہے اور واستو کے ماہرین سے مشاورت کے بعد ہی یہ فیصلہ کئے جانے کی توقع ہے۔ مخالف حکومت ذرائع کا کہنا ہے کہ بلدی انتخابات کے لئے جو عمل تیز رفتاری کیساتھ جاری ہے وہ شیڈول سے قبل مکمل کرنے کی کوشش کے ذریعہ یہ تاثر دیا جارہا ہے کہ انتخابات حکومت کی مرضی کے مطابق کروائے جارہے ہیں۔ علاوہ ازیں تاحال بلدی حدود میں موجود 150 بلدی حلقوں کے محفوظ حلقوں کی فہرست جاری نہیں کی گئی ہے جس پر سیاسی جماعتوں کے علاوہ ٹکٹ کے خواہشمند قائدین میں تشویش پائی جاتی ہے۔ پی ٹی آئی کے بموجب اپوزیشن جماعتوں بی جے پی اور سی پی آئی ایم نے کے سی آر کی ’’چنڈی یگنم‘‘پر شدید تنقید کرتے ہوئے سرکاری مشنری کے بیجا استعمال اور عوامی دولت کے ضائع کرنے کا الزام عائد کیا۔ کے سی آر نے اس الزام کو مسترد کردیا اور یہ دعویٰ کیا کہ اس مذہبی رسم کیلئے سرکاری رقم استعمال نہیں کی جارہی ہے۔ آج صبح چیف منسٹر کا فارم ہاؤز پہنچنے پر روایتی خیرمقدم کیا گیا۔ گورنر تلنگانہ و آندھرا پردیش ای ایس ایل نرسمہن نے بھی پوجا میں حصہ لیا۔ ضلع میدک کے یراولی گاؤں میں واقع وسیع و عریض فارم ہاؤز میں غیرمعمولی انتظامات کئے گئے ہیں۔ صدرجمہوریہ پرنب مکرجی 27 ڈسمبر کو یہاں کا دورہ کرنے والے ہیں۔ آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے ترجمان اور سابق ایم پی مدھو گوڑ یشکی نے کنٹراکٹرس اور تاجرین سے بھاری رقومات وصول کرنے کا ٹی آر ایس پر الزام عائد کیا اور تمام تفصیلات منظر عام پر لانے کا مطالبہ کیا۔

TOPPOPULARRECENT