Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / بلدی انتخابات 189 پرچہ جات نامزدگیاں مسترد

بلدی انتخابات 189 پرچہ جات نامزدگیاں مسترد

ووٹر لسٹ میں نام نہ رہنے اور زائد بچوں کی موجودگی اصل وجہ
حیدرآباد /19 جنوری ( سیاست نیوز ) بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے انتخابات میں مقابلہ کیلئے پرچہ نامزدگیاں داخل کرنے والے امیدواروں میں 7 افراد نے اپنا پرچہ نامزدگی کو واپس لے لیا ہے اور انتخابات میں مقابلہ سے دستبرداری اختیار کرلی ہے ۔ تاہم بلدی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ اس تعداد میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے ۔ تاحال بلدی عہدیداروں نے پرچہ نامزدگیوں کی جانچ کے دوران 189 پرچہ نامزدگیوں کو مسترد کردیا ہے ۔ جن میں اکثر و بیشتر دو سے زائد بچوں کی موجودگی فہرست رائے دہندگان میں نام کی عدم موجودگی و دیگر وجوہات شامل ہیں ۔ بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے 150 ڈیویژنس کیلئے کل 4039 پرچہ نامزدگیاں داخل کی گئی جن میں 189 کو مسترد کردیا گیا اور 7 نے اپنا پرچہ نامزدگی واپس لے لیا ہے ۔ جبکہ 3850 امیدوار اب بھی میدان میں ہیں ۔ جن میں تلنگانہ راشٹرا سمیتی سے سب سے زیادہ 839 ، تلگودیشم پارٹی سے 658 ، کانگریس 659 ، بی جے پی 426 بی ایس پی 106 سی پی آئی 29 سی پی آئی ایم 41 ایم آئی ایم سے 85 لوک ستہ سے 47 وائی ایس آر پارٹی سے 3 دیگر رجسٹرڈ پارٹیوں سے 71 کے علاوہ 886 آزاد امیدواروں نے پرچہ نامزدگیاں داخل کی ہیں ۔ بلدی انتخابات سے جن 7 امیدواروں نے اپنا پرچہ نامزدگی واپس لے لیا ہے اور انتخابات سے دستبرداری اختیار کرلی ہے ان میں ٹی آر ایس ایک تلگودیشم سے ایک اور دیگر سیاسی جماعت سے ایک اور 4 آزاد امیدوار شامل ہیں ۔ سرور نگر اکبر باغ ، اپوگوڑہ ، دتاتریہ نگر ، کونڈا پور اور گچی باؤلی ڈیویژنس سے پرچہ نامزدگیاں واپس لے لی گئی ہیں ۔ ایڈیشنل کمشنر بلدیہ مسٹر سریندر موہن نے بتایا کہ کئی امیدوار جو سیاسی پارٹیوں سے دعویداری کرتے ہوئے پرچہ نازدگیاں داخل کی ہیں ۔ 21 جنوری دوپہر 3 بجے تک بی فارم داخل کرسکتے ہیں اور بی فام داخل کرنے کی 21 جنوری آخری تاریخ رہے گی ۔

TOPPOPULARRECENT