Sunday , August 20 2017
Home / پاکستان / بلوچستان میں امریکی ڈرون حملے سے باہمی تعلقات متاثر : پاکستان

بلوچستان میں امریکی ڈرون حملے سے باہمی تعلقات متاثر : پاکستان

علاقائی سالمیت کا تحفظ ہماری اولین ترجیح ۔ امریکی وفد کی پاکستان آمد پر سیول و فوجی قیادت نے تشویش سے واقف کروایا
اسلام آباد 10 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) پاکستان نے آج امریکہ سے کہا کہ امریکہ نے اس کی سرزمین جو پر ڈرون حملہ کیا تھا جس میں افغان طالبان کے سربراہ ہلاک ہوگئے تھے اس کے نتیجہ میں باہمی تعلقات کی خلاف ورزی ہوئی ہے ۔ دونوں ممالک نے تاہم دہشت گردی کے محفوظ ٹھکانوں کو ختم کرنے ‘ افغان امن بات چیت اور علاقائی سلامتی کے مسئلہ پر تبادلہ خیال بھی کیا ہے ۔ سینئر ڈائرکٹر برائے افغانستان و پاکستان کے بشمول ایک امریکی وفد آج صبح پاکستان پہونچا اس وفد میں امریکی قومی سلامتی کونسل کے رکن پیٹر لاوائے اور افغانستان و پاکستان کیلئے خصوصی نمائندے رچرڈ اولسن بھی شامل ہیں۔ اس  وفد نے پاکستان کے سیول و فوجی قائدین کے ساتھ تبادلہ خیال کیا ہے ۔ لاوائے نے وزیر اعظم کے مشیر برائے خارجی امور سرتاج عزیز اور معتمد خارجہ اعزاز احمد چودھری سے ملاقاتیں کیں۔ سرتاج عزیز نے امریکی عہدیداروں سے کہا کہ 21 مئی کو جو ڈرون حملے بلوچستان میں کئے گئے تھے وہ نہ صرف پاکستان کی علاقائی سالمیت کی خلاف ورزی ہے بلکہ یہ اقوام متحدہ چارٹر کے اصولوں کی بھی خلاف ورزی ہے ۔ اس حملہ میں افغان طالبان کے لیڈر ملا اختر منصور ہلاک ہوگئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ اس حملہ کے نتیجہ میں دونوں ملکوں کے مابین باہمی تعلقات بھی متاثر ہوئے ہیں۔ افغانستان میں جاری مشن کے کمانڈر جنرل جان نکولسن اور مسٹر اولسن نے پاکستانی فوجی سربراہ جنرل راحیل شریف سے ملاقات کی ۔ بعد ازاں جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اس ملاقات میں علاقائی سلامتی کی صورتحال اور خاص طور پر سرحدات کی نگرانی و افغانستان میں امن و استحکام پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ جنرل راحیل شریف نے بھی بلوچستان میں امریکہ کی جانب سے کئے گے ڈرون حملے پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ اس حملے میں ہی افغان طالبان کے سربراہ ہلاک ہوگئے تھے ۔ جنرل رحیل شریف نے کہا کہ اس کے نتیجہ میں باہمی تعلقات اور اعتماد کی فضا متاثر ہوئی ہے ۔ جنرل راحیل شریف نے بتایا کہ اس حملے کی وجہ سے پاکستان دہشت گردوں کے خلاف جو مہم ضرب عزب کے نام سے چلا رہا ہے اس پر بھی منفی اثر ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی فوج کی جانب سے دور رس اثرات کے حامل اقدامات کئے جا رہے تھے تاہم امریکی فوج نے جو کارروائی کی ہے اس کے نتیجہ میں ان کارروائیوں پر اثر ہوا ہے ۔ بات چیت میں افغانستان میں امن کے مسئلہ پر بھی غور کیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT