Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / بلڈرس کو ایک فون کال پر واٹر ٹینکر دستیاب

بلڈرس کو ایک فون کال پر واٹر ٹینکر دستیاب

غریب عوام بوند بوند پانی کو ترس رہے ہیں
حیدرآباد ۔ 4 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : ذمہ دار چاہے حکومت ہو یا عوامی نمائندے مصیبت عوام جھیل رہے ہیں ۔ چندرائن گٹہ سے دو کلومیٹر دور بنڈلہ گوڑہ میں کئی بستیوں میں رہنے والے عوام کو پانی کی شدید قلت کا سامنا ہے ۔ غوث نگر ، نوری نگر ، محمد نگر ، اسمعیل نگر ، ملت نگر اور جہانگیر آباد گنجان آبادی والی بستیاں ہیں تاہم گذشتہ دس سال سے یہ بستیاں تمام بنیادی سہولتوں سے یکسر محروم ہیں ان بستیوں میں رہنے والے پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں ان بستیوں میں رہنے والے عوام ایک ہفتہ چار پانچ دن گورنمنٹ ٹینکرس سے پانی خریدا کرتے ہیں ۔ ٹینکر ڈرائیورس ہر بیارل پر دس روپئے وصول کرتے ہیں اور ہر خاندان ٹینکر سے تین تا چار بیارل پانی حاصل کرتا ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ ایک خاندان پانی پر ماہانہ پانچ سو روپئے خرچ کرتا ہے ۔ حیدرآباد میٹرو پولیٹن واٹر ورکس نے غوث نگر کے قریب ایک بڑا واٹر ٹینک تعمیر کیا ہے لیکن اس ٹینک سے گھروں کو پانی کی سربراہی نہیں ہورہی ہے ۔ مقامی آبادی کی اکثریت کی زندگی یومیہ اجرت پر بسر ہورہی ہے ۔ ٹینکر کے آنے کے دن یہ لوگ یا تو کام پر نہیں جاتے یا دیر سے پہونچتے ہیں ۔ اس طرح وہ اپنی روز کی کمائی سے محروم ہوجاتے ہیں ۔ بعض مقامی افراد نے نشاندہی کی کہ بعض بلڈرس مقامی حکام کو رشوت دے کر واٹر ٹینکرس کا رخ کنسٹرکشن سائٹس کی طرف موڑ دیتے ہیں ۔ بلڈرس کو پانی محض ایک فون کال پر مل جاتا ہے جب کہ مقامی عوام کو منت سماجت کے باوجود پانی نہیں حاصل ہورہا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT