Thursday , April 27 2017
Home / Top Stories / بلیک منی تو ایک بہانہ ہے، اصل میں بی ایس پی نشانہ ہے : مایاوتی

بلیک منی تو ایک بہانہ ہے، اصل میں بی ایس پی نشانہ ہے : مایاوتی

 

نوٹ بندی کے فیصلے سے دستبرداری تک جدوجہد جاری رکھنے ممتا بنرجی کا عزم

نئی دہلی 26 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) یہ دعویٰ پیش کرتے ہوئے کہ مودی حکومت نے صد فیصد بی جے پی کے سیاسی مفادات کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے کرنسی نوٹوں کی منسوخی کا عجلت پسندانہ فیصلہ کیا ہے۔ بہوجن سماج پارٹی سربراہ مایاوتی نے آج کہا ہے کہ اس فیصلہ سے 90 فیصد عام آدمی مشکلات سے دوچار ہوگئے ہیں۔ انھوں نے دریافت کیاکہ یہ فیصلہ کس طرح قوم کے مفاد میں ہوگا جس کے باعث 90 فیصد عوام مشکلات میں پھنس گئے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ مودی حکومت نے خود ساختہ سروے کے ذریعہ ایک غلط فیصلہ کو درست ثابت کرنے کی کوشش کی ہے۔ جبکہ وزیراعظم جذباتی ہوکر آنسو بھی بہائے ہیں۔ کیا یہ بلیک میل کی تعریف میں نہیں آتا۔ مایاوتی نے آج میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ اترپردیش کے اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کا اصل مقابلہ بی ایس پی کے ساتھ ہے جس کے باعث پارٹی قائدین بی ایس پی کے خلاف بے بنیاد اور گمراہ کن بیانات دے رہے ہیں۔

سابق چیف منسٹر نے یہ ادعا کیاکہ اترپردیش کانگریس مصنوعی نظام تنفس پر زندہ ہے جبکہ حکمراں سماج وادی پارٹی بی جے پی کی قدیم دوست جماعت ہے جس کی وجہ سے سرکاری پالیسیوں کی مخالفت نہیں کی جارہی ہے۔ کولکتہ سے موصولہ اطلاعات کے بموجب کرنسی نوٹوں کی منسوخی کے فیصلہ پر وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف تنقیدوں کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے آج کہا ہے کہ عوام دشمن فیصلے سے دستبرداری تک جدوجہد کرتی رہیں گی۔ کیوں کہ اس فیصلے سے ملک میں غیر معلنہ معاشی ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔ ترنمول کانگریس لیڈروں کے ساتھ بند کمرہ کے اجلاس میں ممتا بنرجی نے مودی حکومت کے خلاف لعن طعن کی اور نریندر مودی کو ایک خراب سیاستداں اور بدترین منتظم (ایڈمنسٹریٹر) قرار دیا جوکہ جھوٹ پھیلاتے ہوئے عام آدمی کی مشکلات کا تماشہ دیکھ رہے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ نوٹوں کی منسوخی کے فیصلہ سے دستبرداری تک ان کی پارٹی پارلیمنٹ اور سڑکوں پر جدوجہد کرتے رہے گی اور واضح رہے کہ حکمراں ترنمول کانگریس نے مغربی بنگال میں 28 نومبر کو ایک ریالی منعقد کرنے کا اعلان کیا ہے۔ جبکہ پارٹی سربراہ 29 نومبر کو لکھنؤ میں 30 نومبر کو پٹنہ میں خطاب کریں گی۔ مغربی بنگال میں بائیں بازو کی جماعتوں بشمول سی پی آئی اور سی پی ایم سے 28 نومبر کو ایک روزہ بند منانے کا اعلان کیا ہے لیکن چیف منسٹر ممتا بنرجی نے بند کی تائید سے انکار کردیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT