Thursday , September 21 2017
Home / شہر کی خبریں / بنڈلہ گوڑہ آر ٹی اے دفتر میں برسر عام رشوت کا بازار گرم

بنڈلہ گوڑہ آر ٹی اے دفتر میں برسر عام رشوت کا بازار گرم

انسداد رشوت ، خاتمہ رشوت کے دعوے کھوکھلے ثابت ، حکومت کو توجہ دینے کی ضرورت
حیدرآباد۔ 18 اگسٹ ( سیاست نیوز ) ریاست تلنگانہ میں رشوت کے خاتمہ کیلئے حکومت کی جانب سے تمام محکمۂ جات کو شفاف بنانے کیلئے متعدد اقدامات کئے جا رہے ہیں اور یہ دعوے بھی کئے جا رہے ہیں کہ ریاستی محکمۂ انسداد رشوت ستانی کی بہتر کارکردگی سے کرپشن پر بڑی حد تک کنٹرول کر لیا گیا ہے لیکن ان دعوؤں میں کس حد تک صداقت ہے اس کا اندازہ بندلہ گوڑہ میں کھولے گئے ساؤتھ زون آر ٹی اے دفتر میں جاری برسر عام رشوت کے بازار میں گرمی کو دیکھتے ہوئے لگایا جا سکتا ہے۔ جی ہاں۔۔ ساؤتھ زون آرٹی اے دفتر تمام آر ٹی اے دفاتر میں سب سے زیادہ بدنام دفتر تصور کیا جانے لگا ہے جہاں درمیانی افراد کی من مانی کے علاوہ کھلے عام رشوت ستانی عام ہے اور اس کے خاتمہ کے کوئی آثار نظر نہیں آرہے ہیں بلکہ ساؤتھ زون آر ٹی اے دفتر میں جاری سرگرمیوں کے سبب ایجنٹس اس علاقہ کا رخ کر رہے ہیں اور من مانی چلائی جانے لگی ہے۔ بہادر پورہ سے ساؤتھ زون آر ٹی اے دفتر کی بندلہ گوڑہ منتقلی کے بعد ایسا سمجھا جا رہا تھا اس دفتر میں رشوت کا چلن کم ہو جائے گا لیکن اس دفتر میں بھی ویسی ہی صورتحال ہے بلکہ خدمات میں اضافہ کے سبب حالات مزید ابتر ہوتے جارہے ہیں۔ نئی گاڑی کے رجسٹریشن‘ لائسنس بنانے کے علاوہ روڈ ٹرانسپورٹ اتھاریٹی سے متعلقہ خدمات کی فراہمی کیلئے قائم کئے جانے والے اس دفتر میں شہری راست طور پر اپنا کوئی کام نہیں کروا سکتے خواہ وہ کتنے ہی قابل یا تعلیمیافتہ کیوں نہ ہوں انہیں ایجنٹ سے رجوع ہونا ہی پڑتا ہے بلکہ راست عہدیداروں تک پہنچنے والوں کو بھی ایجنٹ سے رجوع کیا جا تا ہے ۔ نئی گاڑی کے رجسٹریشن کے لئے فیس کی ادائیگی کے بعد جب گاڑی کا انجن نمبر وغیرہ حاصل کیا جاتا ہے تو وہیکل انسپکٹر کی موجودگی میں 50تا100روپئے وصول کئے جاتے ہیں اور وصول کرنے والوں کو اس کا کوئی خوف نہیں ہوتا۔ اتنا ہی نہیں بلکہ جس مقام پر تصویر کشی کی جاتی ہے وہاں بھی درمیانی افراد کی من مانی چلتی ہے بلکہ جو درمیانی افراد کے توسط سے پہنچتے ہیں ان کی تصویر کشی بہ آسانی ہوجاتی ہے اور جو راست تمام امور کی انجام دہی اور دستاویزات کے ساتھ پہنچتا ہے اسے قطار میں کھڑے رہنا پڑ تا ہے۔ ساؤتھ زون کے اس آر ٹی اے دفتر میں بعض درمیانی افراد مقامی سیاسی جماعت کے قائدین کی تصاویر کا غلط استعمال کرتے ہوئے یہ تاثر دینے کی کوشش کر رہے ہیں کہ انہیں ان سیاسی قائدین کی سرپرستی حاصل ہے جو اس علاقہ کی نمائندگی کرتے ہیں۔ ان درمیانی افراد کی جانب سے دفتر میں باضابطہ ہورڈنگس نصب کرتے ہوئے یہ تاثر دیا جا رہا ہے کہ ان کے خلاف کوئی کاروائی ممکن نہیں ہے کیونکہ انہیں سیاسی پشت پناہی حاصل ہے۔ بندلہ گوڑہ آر ٹی اے دفتر میں جاری ان سرگرمیوں سے پرانے شہر کے عوام کو ہی تکالیف کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ اس دفتر سے ساؤتھ زون کے عوام ہی رجوع ہوتے ہیں جنہیں درمیانی افراد کی ہراسانی کے باعث مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ دفتر کے ذرائع کا ادعا ہے کہ جو لوگ بطور درمیانی آدمی خدمات انجام دے رہے ہیں ان میں بعض کا کچھ سیاسی جماعتوں سے تعلق ہے لیکن کئی ایسے ہے جو سیاسی پشت پناہی کا ڈھونگ کرتے ہوئے عہدیداروں اور عوام کو خائف کرنے کی پالیسی اختیار کئے ہوئے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT