Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / بنگلور میں دینی مدرسہ کے استاد مولانا انظر شاہ گرفتار

بنگلور میں دینی مدرسہ کے استاد مولانا انظر شاہ گرفتار

عسکریت پسند تنظیم القاعدہ سے تعلقات اور تعاون کا شبہ
نئی دہلی 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) دہلی پولیس نے القاعدہ سے تعلقات کے شبہ میں بنگلور میں ایک دینی مدرسہ کے استاد کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ عسکریت پسند تنظیم کے خلاف جاریہ کارروائی میں یہ چوتھی گرفتاری ہے۔ دہلی پولیس اسپیشل سیل کی ٹیم نے بنگلور میں مولانا انظر شاہ کو حراست میں لے لیا اور ٹرانزٹ ریمانڈ پر انھیں دہلی منتقل کرنے کے بعد مقامی عدالت میں پیش کیا گیا جس پر انھیں 20 جنوری تک پولیس تحویل میں دے دیا گیا۔ قبل ازیں ماہ ڈسمبر میں دہلی پولیس نے برصغیر ہند میں سرگرم القاعدہ کے 3 کارکنوں کو گرفتار کرلیا تھا سب سے پہلے 41 سالہ محمد آصف کو گرفتار کرلیا گیا جوکہ القاعدہ میں نوجوانوں کی بھرتی اور تربیت کا محرک تھا۔ بنگلورو میں منعقدہ ایک مذہبی اجتماع میں مولانا انظر شاہ نے محمد آصف سے ملاقات کی تھی جہاں پر عبدالرحمن اور ظفر مسعود کا تعارف کروایا گیا۔ اس موقع پر مولانا سے کہا گیا تھا کہ ضرورت پڑنے پر نوجوانوں کی بھرتی اور تربیت کیلئے تعاون کریں۔ دہلی پولیس کے اسپیشل سیل کو مولانا انظر شاہ اور عبدالرحمن ۔ ظفر مسعود کے درمیان رابطہ کا ثبوت ہاتھ لگا ہے جنھوں نے انٹرنیٹ ٹیلیفون پر آپس میں بات چیت کی تھی۔ علاوہ ازیں شاہ اور مسعود کے درمیان رقمی لین دین کا بھی پتہ چلایا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مزید مشتبہ افراد پر پولیس کی نگرانی ہے اور بہت جلد ان کی گرفتاریاں ممکن ہیں۔ واضح رہے کہ سپٹمبر 2014 ء میں افغان ۔ پاک سرحد پر نامعلوم مقام پر ایک اجلاس میں القاعدہ سربراہ ایمن الظواہری نے برصغیر ہند کیلئے علیحدہ شاخ کا قیام عمل میں لایا ہے جسے آل القاعدہ مایوڈلس ان دی انڈین سب کانٹیننٹ (AQIS) کا نام دیا گیا ہے۔ مذکورہ اجلاس میں ہندوستان سے مولانا آسیم عمر عرف ثناء الحق اور محمد آصف نے نمائندگی کی تھی۔ برصغیر ہند کی شاخ کے صدر کی حیثیت سے عمر کے تقرر کے بعد کئی ایک عسکریت پسند بشمول انڈین مجاہدین کے سربراہ ریاض بھٹکل نے ملاقات کی تھی جوکہ ہنوز مفرور ہے۔ ایک اور سینئر انڈین مجاہدین کے کمانڈر بابا ساجد حال ہی میں شام میں لڑتے ہوئے مارا گیا تھا۔ عمر نے سوشیل میڈیا پر آصف سے رابطہ قائم کیا تھا جس نے زیارت ویزا پر تہران کا دورہ کیا تھا۔ پولیس نے بتایا کہ عمر، آصف اور قاسم اترپردیش میں سنبھل کے متوطن ہیں۔

TOPPOPULARRECENT