Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / بنگلور کوآج کرو یا مرو صورتحال‘عرفان توجہ کا مرکز

بنگلور کوآج کرو یا مرو صورتحال‘عرفان توجہ کا مرکز

بنگلور۔26 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) انڈین پریمیئر لیگ کے10 ویں ایڈیشن میں سب سے کم اسکور پر آؤٹ ہونے ، مسلسل میچ ہارنے اور ناقص کارکردگی کے سبب تنقید کا سامنا کر رہی ویراٹ کوہلی کی رائل چیلنجرز بنگلور کو اپنا گزشتہ میچ بارش کی نذر ہونے سے اور بھی بڑا جھٹکا لگا ہے اور کل وہ اپنے اگلے مقابلے میں گجرات لائنز کے خلاف کامیابی درج کرنے اوراپنا موقف بہتر بنانے کی کوشش کرے گی۔ بنگلور کی ٹیم نے آٹھ میچوں میں پانچ ناکامیاں برداشت کی ہیں اور اس کا پچھلا میچ سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف بارش کی نذر ہوگیا  جس سے اس کو پلے آف میں رسائی کے امکانات کو شدید نقصان ہواہے ۔ بنگلور کی ٹیم کو اب سرفہرست چار ٹیموں میں پہنچنے کے لئے باقی اپنے تمام چھ مقابلوں میں کامیابی ناگزیر ہے ۔ بارش سے میچ متاثر ہونے کے بعد اسے حیدرآباد کے ساتھ ایک نشان ملا اور اب وہ پانچ نشانات کے ساتھ  چھٹے نمبر پر ہے ۔ وہیں گجرات کا موقف  بھی بہت نازک ہے اور اس کی فی الحال پلے آف کی امیدیں معدوم ہوگئی ہیں جو اپنے سات میچوں میں پانچ میچ گنوانے کے بعد چار نشانات کے ساتھ ٹیموں کے جدول میں سب سے آخری نمبر پر ہے ۔ کوہلی نے کندھے کی زخم کے بعد زبردست واپسی کی تھی لیکن اس کے بعد بھی وہ ٹیم کا حوصلہ بلند نہیں کر سکے ‘دوسری جانب آئی پی ایل کے سب سے مسلسل اور کامیاب کھلاڑیوں میں ایک آل راؤنڈر سریش رائنا بھی انفرادی طور پر اچھا کھیلنے کے بعد بھی گجرات کو فتح کی پٹری پر نہیں لا سکے ہیں۔ گجرات کے لئے بھی پلے آف کی توقعات برقرار رکھنا ہے تو باقی کے تمام میچوں کو جیتنا لازمی ہو گا۔یہ حیرت کی بات ہی ہے کہ گجرات نے اب تک تقریباً ہر میچ میں بہترین بیٹنگ کرنے کے باوجود بھی شکست کا منہ دیکھا ہے اور اس کی سب سے بڑی کمزوري بولنگ کے شعبے میں نظر آتی ہے جہاں اس کے بولر مسلسل مایوس کررہے  ہیں اور ان حالات میں آل راؤنڈر عرفان پٹھان سے ٹیم کی امیدیں وابستہ ہوچکی ہیں جنہیں گزشتہ روز زخمی اسمتھ کے مقام پر ٹیم میں متبادل کے طور پر شامل کیا گیا ہے۔ گجرات نے اپنا پچھلا میچ کنگز الیون پنجاب کے خلاف26 رنز سے ہارا تھا۔ اس میچ میں بھی بولروں  نے مہنگی بولنگ کرکے خوب رن دیئے ۔ گجرات مسلسل ہی ایک غلطی کو دہرا رہا ہے اور اس میں اب تک بہتری نہیں کر سکا ہے جس کا نتیجہ ہی ہے کہ وہ جدول میں آخری نمبر پر ہے ۔

TOPPOPULARRECENT