Tuesday , August 22 2017
Home / دنیا / بنگلہ دیشی بلاگر کے قتل میں ایف بی آئی کی مدد کا خیرمقدم

بنگلہ دیشی بلاگر کے قتل میں ایف بی آئی کی مدد کا خیرمقدم

معتمدعمومی اقوام متحدہ بانکی مون کی جانب سے بلاگر کے قتل کی مذمت

ڈھاکہ۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش سیکولر بلاگر نیلوئے چکربورتی نیل کے بے رحمانہ قتل کی تحقیقات ایف بی آئی کی مدد کا خیرمقدم کرے گا۔ یہ گزشتہ چھ مہینوں میں چوتھا ایسا واقعہ ہے جس کے سلسلے میں القاعدہ سے مربوط اسلام پسندوں پر شبہ کیا جارہا ہے۔ بنگلہ دیش کے وزیر داخلہ اسدالزماں خان کمال نے کہا کہ اگر ایم بی آئی تحقیقات میں ہماری مدد کرنا چاہتی ہے تو ہم اس کا خیرمقدم کریں گے۔ وہ کل رات ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ سرکاری عہدیداروں کے بموجب امریکی محکمہ تحقیقات نے بلاگر کے قتل کی تحقیقات میں مدد دینے کا تیقن دیا ہے، تاہم وزیر داخلہ بنگلہ دیش نے کہا کہ ہمارا محکمہ تحقیقات قاتلوں کی شناخت کرنے کے قریب پہنچ گیا ہے جو مذہبی جنونی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس معاملے پر آئی جی پی اور متعلقہ عہدیداروں سے تبادلہ خیال کرچکے ہیں اور قاتلوں کو عنقریب پکڑ لیا جائے گا۔ تحقیقاتی ٹیم کو ان کا سراغ مل چکا ہے۔

40 سالہ بلاگر پر چار مشتبہ القاعدہ سے مربوط اسلام پسندوں نے اس کی قیام گاہ پر نماز جمعہ کے کچھ ہی دیر بعد حملہ کیا تھا۔ اس کی نعش پر زخموں کے 14 نشانات تھے جن میں سے 4 اس کی گردن پر تھے۔ ایک سینئر پولیس عہدیدار نے ایف بی آئی نے کل قتل کی تحقیقات میں مدد دینے کی تجویز پیش کی ہے۔ ڈپٹی کمشنر منتصرالاسلام نے کہا کہ ایف بی آئی عہدیداروں نے پولیس سے ٹیلیفون پر ربط پیدا کرکے امداد کی پیشکش کی ہے، لیکن بنگلہ دیشی عہدیداروں کو اس سلسلے میں رسمی منظوری کا انتظار ہے۔ ایف بی آئی کی ٹیم قبل ازیں مصنف ۔ بلاگر اویجیت رائے کے قتل کے موقع پر جو ایک امریکی شہری تھا، فروری میں بنگلہ دیش کا دورہ کرچکی ہے اور سراغوں میں بنگلہ دیشی عہدیداروں کو شریک کرچکی ہے۔ اقوام متحدہ سے موصولہ اطلاع کے بموجب معتمد عمومی بانکی مون نے بھی 2 آزاد انسانی حقوق ماہرین کے ساتھ بنگلہ دیشی بلاگر کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے خاطیوں کو جلد از جلد سزا دینے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بنگلہ دیش کو آزادیٔ اظہار خیال اور دیگر انسانی حقوق کو یقینی بنانا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT