Wednesday , September 20 2017
Home / Top Stories / بنگلہ دیش :مطیع الرحمن نظامی کو پھانسی دیدی گئی

بنگلہ دیش :مطیع الرحمن نظامی کو پھانسی دیدی گئی

جماعت اسلامی سربراہ کو رات 12 بجے تختہ دار پر لٹکایا گیا
ڈھاکہ 10 مئی ( سیاست ڈا ٹ کام ) بنگلہ دیش میں آج رات جماعت اسلامی کے سربراہ مطیع الرحمن نظامی کو پھانسی دیدی گئی ۔ پاکستان کے خلاف 1971 میں لڑی گئی جنگ آزادی میں جنگی جرائم کے ارتکاب کے الزام میںسزا پانے والے مطیع الرحمن نظامی سینئر ترین مذہبی رہنما تھے ۔ 73 سالہ جماعت اسلامی لیڈر کو عدالت کی جانب سے سزائے موت سنائی گئی تھی اور انہوں نے صدر سے رحم کی اپیل کرنے سے انکار کردیا تھا ۔ پھانسی کا نظارہ کرنے والے ایک پولیس عہدیدار نے کہا کہ مطیع الرحمن نظامی کو آج رات 12 بجے ڈھاکہ سنٹرل جیل میں پھانسی دی گئی ۔ انہوں نے کہا کہ سزا پر عمل ہوچکا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک سیول سرجن نے معائنہ کے بعد انہیں مردہ قرار دیا گیا ہے ۔ اطلاعات کے بموجب مطیع الرحمن نظامی کو 20 منٹ تک پھندے پر لٹکا رہنے دیا گیا ۔ ڈھاکہ کے ضلع مجسٹریٹ ‘ انسپکٹر جنرل محابس اور سینئر پولیس عہدیداروں نے پھانسی کا مشاہدہ کیا ۔ بنگلہ دیش کی سپریم کورٹ نے جنگی جرائم کے الزام میں انہیں دی گئی پھانسی کی سزا کے خلاف مطیع الرحمن کی قطعی اپیل کو 5 مئی کو مسترد کردیا تھا ۔ پھانسی کے وقت ڈھطاکہ جیل کے اندر اور باہر سکیوریٹی کے کڑے انتظام کئے گئے تھے اور ریاپڈ ایکشن بٹالین کو بھی متعین کردیا گیا تھا ۔ جیل کے روبرو راستوں کو بھی بند کردیا گیا تھا ۔ جیل حکام کی جانب سے آخری ملاقات کی ہدایت دئے جانے پر مطیع الرحمن کی شریک حیات ‘ ان کے دو فرزندان اور بہووں نے آج شام جیل میں ان سے ملاقات کی تھی ۔ مطیع الرحمن نظامی 2010 سے جیل میں تھے ۔

TOPPOPULARRECENT