Friday , October 20 2017
Home / Top Stories / بنگلہ دیش میں انتخابی تشدد‘ 8 افراد ہلاک

بنگلہ دیش میں انتخابی تشدد‘ 8 افراد ہلاک

مقامی کونسل کے پارٹی خطوط پر پہلی بار انتخابات کے دوران حریف پارٹیوں میں جھڑپیں
ڈھاکہ۔8مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) کم از کم 8افراد ہلاک کردیئے گئے اور دیگر کئی گذشتہ 24گھنٹے کے دوران جھڑپوں میں جو مقامی کونسل کے انتخابات کے سلسلہ میں ہوئی تھیں ‘ کئی زخمی ہوگئے ۔  مقامی کونسل کیلئے کل چوتھے مرحلہ کی رائے دہی ہوئی تھی جس میں 703 یونین پریشدوں کے لئے انتخابات ہوئے چونکہ انتخابات 11فبروری کو مقرر تھے ‘ کم از کم 70افراد جمعہ کے دن تک انتخابی تشدد میں ہلاک ہوگئے ۔ مقامی حکومت کیلئے پہلی بار پارٹی خطوط پر انتخابات منعقد کئے گئے ہیں ‘ آخری مرحلے کی رائے دہی چار دن کو مقرر ہے ۔ بنگلہ دیش نیوز کے خبر کے بموجب ایک شخص ہلاک اور دیگر130 زخمی ہوگئے جب عوامی لیگ کے باغی امیدوار کے حامیوں اور نفاذ قانون محکمہ کے ارکان عملہ کے درمیان دھاپرہاک سعد اللہ پور گلبندھا میںجھڑپیںہوئیں ‘دو افراد ہلاک اور دیگر 10 زخمی ہوگئے جب کہ عوامی لیگ کے امیدوار کے حامی پارٹی کے باغی امیدوار راج شاہیکے علاقہ باگمارا میں ایک دوسرے سے متصادم ہوگئے ۔ ڈی آئی جی پولیس ایم خورشید حسن نے کہا کہ عوامی لیگ کارکن صدیق الرحمن کو ایک نامعلوم شخص نے گولی مار کر ہلاک کردیا اور وہ خود بھی آچپڑہ یونین میں جھڑپ کے دوران قلب پر حملہ سے انتقال کرگیا ۔ ڈی آئی جی نے کہا کہ پولیس نے صورتحال پرقابو  پانے کیلئے فائرنگ کی اور آنسو گیس کے شل داغے ۔ نرسنگ گڑھی ایک 60سال قدیم حامی جو ایک آزاد امیدوار کا تھا برسراقتدار عوامی لیگ کے امیدوار کے حامیوں کے حملے میں ہلاک ہوگیا ‘ دیگر تین شدید زخمی ہوگئے جب کہ سرینگر یونین میں جھڑپ ہوئی ۔ ہرینگ ماری یونین بلیا ڈنگی اُپ ضلع کے ٹھاکر گاؤں میں ایک شخص مبینہ طور پر حریف امیدواروں کے حامیوں کے ساتھ جھڑپ کے دوران پولیس فائرنگ سے ہلاک ہوا ۔ پومیلا میں ایک نوجوان مادھاپور یونین میں جھڑپوں کے دوران قتل کردیا گیا ۔ عوامی لیگ کے امیدوار زخمی ہونے والے چھ افراد میں شامل ہیں ۔ تشدد اُس وقت بھڑک اٹھا جب کہ رائے دہی کے دوران کئی مقامات پر بوگس رائے دہی اور بے قاعدگیوں کی شکایات وصول ہوئیں ۔

TOPPOPULARRECENT