Thursday , August 17 2017
Home / عرب دنیا / بنگلہ دیش میں ایرپورٹس کے حفاظتی انتظامات میں شدت،رخصت کرنے آنے والوں پر امتناع

بنگلہ دیش میں ایرپورٹس کے حفاظتی انتظامات میں شدت،رخصت کرنے آنے والوں پر امتناع

ڈھاکہ ۔ 26 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش نے آج ایرپورٹس کے حفاظتی انتظامات میں شدت پیدا کرتے ہوئے اپنے عزیزوں کو رخصت کرنے آنے والے افراد کے داخلہ پر عارضی طور پر امتناع عائد کردیا۔ یہ شہری ہوا بازی کے مراکز پر امتناع کا ایک بڑا اقدام ہے جس کی وجہ یہ اندیشے ہیں کہ سبوتاج کی تازہ کارروائیوں کا اندیشہ ہے۔ قبل ازیں ایک مذہبی جلوس پر حملے کئے جاچکے ہیں اور دو غیرملکی افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ حملوں کی ذمہ داری دولت اسلامیہ نے قبول کرلی ہے۔ صیانتی اقدامات ایرپورٹس پر ملک گیر سطح پر شدید کردیئے گئے۔ وزیرداخلہ اسدالزماں خان کمال نے سرکاری زیرانتظام خبر رساں ادارہ بی ایس ایف سے کہا کہ شہری ہوا بازی کے وزیر راشد خان مینن اور سینئر صیانتی عہدیداروں نے خطرہ کا سامنا کرنے یہ فیصلہ کیا ہے۔ وہ ایک وزارتی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔ تاہم کمال نے کہا کہ سفارتی انتظامات میں ایرپورٹس پر شدت کو صیانتی چوکسی قرار نہیں دیا جاسکتا۔ اسے صرف ایک ابتدائی اقدام قرار دیا جاسکتا ہے۔ حکومت نے منصوبہ بنایا ہیکہ عالمی سطح کے حفاظتی انتظامات بنگلہ دیش کے تمام ایرپورٹس پر کئے جائیں گے۔ صیانتی عہدیداروں کا کہنا ہیکہ عارضی امتناع کا مطلب صرف حفاظتی انتظامات ہیں۔ ان احکام پر آج صبح سے عمل آوری کی جارہی ہے۔ صیانتی عہدیداروں کا کہنا ہیکہ رخصت کیلئے آنے والوں کو ایرپورٹ کے اندر آنے کی اجازت نہیں ہے۔ یہ پابندی ضرورت باقی رہنے تک جاری رکھی جائے گی۔ عالمگیر حسین شیمول سینئر اسسٹنٹ پولیس سپرنٹنڈنٹ مسلح پولیس بٹالین نے شاہ جلال ایرپورٹ پر ایک پریس کانفرنس کے دوران اس کا انکشاف کیا۔ ایک اور عہدیدار تنزیلااختر نے تاہم کہا کہ رخصت کرنے آنے والوں سے ایرپورٹس میںداخلہ پر عارضی امتناع کی ماضی میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ اسی طرح کے اقدامات ماضی میں کبھی نہیں کئے گئے۔ گذشتہ ہفتہ ایک 12 سالہ لڑکا ہلاک اور 96 افراد زخمی ہوگئے تھے جب ایک مذہبی جلوس کو نشانہ بنا کر بم حملے کئے گئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT