Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / بنگلہ دیش میں تشدد جاری ‘دو افراد ہلاک‘4 گرفتاریاں

بنگلہ دیش میں تشدد جاری ‘دو افراد ہلاک‘4 گرفتاریاں

بدھ راہب کے قتل کے الزام میں تین میانماری شہری اور بنگلہ دیشی ہم جنس پرستی کارکن کے قتل پر تین عسکریت پسند گرفتار
ڈھاکہ ۔15مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) دو افراد کی نعشیں آج بنگلہ دیش کے ضلع غازی پور کے ایک گڑھے سے برآمد ہوئیں‘ نعشوں کے جسموں پر تیز دھار ہتھیاروں سے لگائے ہوئے زخموں کے نشانات تھے ۔غازی پور کے کونسلر محمد بادل میاں نے نعشیں آج صبح ستارنگر صنعتی علاقہ ٹونگی میں دیکھیں ۔ ٹونگی کے ایس آئی ظہیر الاسلام نے کہا کہ نعشوں کو گڑھوں سے باہر نکال لیا گیا ۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ انہیں ہفتہ کی رات کسی وقت قتل کیا گیا تھا ۔ مہلوکین کے خاندان کے بموجب کونسلر بادل میاں نے کہا کہ 12:30بجے شب بعض لوگوں نے شریف کو اُس کی قیامگاہ پر آواز دے کر باہر طلب کیا تھا ۔ جمن کا اغوا کیا گیا تھا جس نے شریف کو پکڑ کر لے جاتے ہوئے دیکھا گیا تھا ‘ فوری طور پر یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ حملہ آوروں کا اس قتل سے کیا مقصد تھا ۔ گذشتہ چند ہفتوں سے اعلیٰ سطحی حملوں کے واقعات خاص طور پر اقلیتوں ‘ سیکولر بلاگرس ‘ دانشوروں اور غیر ملکیوں پر حملے کئے جارہے ہیں ۔ دریں اثناء بنگلہ دیش کی پولیس نے تین افراد بشمول دو میانماری شہریوں کو بدھ راہب کی بے رحمانہ ہلاکت کے الزام میں گرفتار کرلیا ۔ پولیس کے بموجب مسلم غالب آبادی والے ملک میں اقلیتوں پر یہ تازہ ترین حملہ تھا ‘ دو روہنگیا 25سالہ عبدالرحیم اور 26سالہ محمد ضیاء کے علاوہ 35سالہ سامونگ چک کو مختلف علاقوں سے آج صبح گرفتار کیا گیا ۔

ایک دن قبل ماونگ شوئی ووا کو بندربن پہاڑی ضلع کے خانقاہ کے کے سربراہ کو جو ایک دور افتادہ علاقہ میں واقع ہے ہلاک کردیا گیا تھا ۔ قبل ازیں اسلام پسندوں نے دانشوروں اور اقلیتوں کے قتل کئے تھے ‘ راہب کا قتل بھی اسی مخصوص طریقے سے کیا گیا تھا ۔ راہب کے ارکان خاندان نے پولیس میں قتل کی شکایت درج کروائی تھی ۔ بنگلہ دیش کی پولیس نے ایک مشتبہ اسلامی عسکریت پسندوں کو جو ایک ممنوعہ دہشت گرد گروپ سے تعلق رکھتا ہے  کو ملک کے اولین ہم جنس پرستی کی تائید کرنے والے رسالہ کے ایڈیٹر اور اس کے دوست کو کلہاڑیوں کے ذریعہ ہلاک کردیا گیا ۔ سیکولر بلاگرس ‘ ادیبوں اور اقلیتوں پر حملوں کے سلسلہ کا یہ تازہ ترین واقعہ ہے ۔ 37سالہ مشتبہ شریف الاسلام عرف شہاب کو آج علی الصبح کُشتیا کے علاقہ سے گرفتار کیا گیا ۔ ڈی سی پی ڈھاکہ معروف حسین سردار نے کہا کہ مشتبہ عسکریت پسند ممنوعہ تنظیم انصاراللہ بنگلہ دیش کا رکن تھا ۔ انسداد دہشت گردی محکمہ کے سربراہ معین الاسلام نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ شہاب کے پاس دو بندوقیں تھیں جنہیں قتل کی دو وارداتوں میں استعمال کیا گیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم جنس پرستوں کے حقوق کی تائید کرنے والے کارکنوں کو انہوں نے اسلام کے بارے میں الجھن پیدا کرنے کیلئے قتل کیا ہے ۔ پولیس کے بموجب مشتبہ ملزم ممنوعہ اسلام ی عسکریت پسند تنظیم انصار اللہ بنگلہ دیش کا رکن ہے ۔ 25اپریل کی شام حملہ آور ایکس منان کے گھر میں زبردستی داخل ہوئے تھے جو ایک رسالہ کا ایڈیٹر تھا اور اسے ہلاک کردی ۔

TOPPOPULARRECENT