Monday , October 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بودھن میں بلدیہ کی پھر انہدامی کارروائی

بودھن میں بلدیہ کی پھر انہدامی کارروائی

غیر مجاز عالیشان بنگلے نظر انداز، اقلیتوں کے معمولی مکانات نشانہ پر

بودھن۔/18نومبر، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) آج پھر ایک مرتبہ اچن پلی انیسہ نگر میں موجود نیم سرکاری اراضی پر قابض اقلیتی طبقہ کے افراد کے عارضی مکانات کو محکمہ مال اور این ایس ایف خانگی انتظامیہ کے عہدیداروں نے پولیس کے سخت پہرے میں بھاری بھرکم جے سی بی مشینوں کی مدد سے ڈھادیا۔ متعلقہ بلدی حلقہ نمبر 2کے رکن بلدیہ ٹی آر ایس پارٹی اعجاز خان کی طرف سے مکانات کی انہدامی کارروائی کو ملتوی کرنے کی خواہش پر انہیں حراست میں لے کر بودھن سے دور واقع ورنی منڈل کے پولیس اسٹیشن میں محروس رکھا گیا۔ گزشتہ ماہ بھی محکمہ ریونیو کے عہدیداروں نے اس طرح کی کارروائی انجام دے کر چند مکانات کو منہدم کردیا تھا تب رکن اسمبلی بودھن جناب شکیل عامر نے مداخلت کرتے ہوئے عہدیداروں سے خواہش کی تھی کہ پہلے ان متاثرہ افراد کو متبادل جگہ فراہم کریں۔ لیکن متاثرہ افراد کو متبادل پسندیدہ جگہ فراہم کرنے سے پہلے آج اچانک انہدامی کارروائی کرتے ہوئے تقریباً تمام مکانات منہدم کردیئے گئے کانگریس پارٹی کے قائد سابق رکن بلدیہ خواجہ فیاض الدین نے مسلم اقلیتی طبقہ کے مکانات کی وقفہ وقفہ سے انہدامی کارروائی پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بودھن شہر میں واقع وقف اراضیات پر ناجائز قبضوں کا سلسلہ برسوں سے جاری ہے۔ انہوں نے بھیم گٹہ کے قریب واقع حضرت جمال شاہ قادری درگاہ کی فاضل اراضی پر اکثریتی فرقہ کے افراد قبضہ کرلیتے ہوئے عالیشان بنگلے تعمیر کرچکے ہیں لیکن سرکاری عہدیدار اس طرف توجہ نہیں دیتے۔ ذرائع کے بموجب انیسہ نگر کے متاثرین کو حکومت پانڈو فارم میں اراضی فراہم کرنے تیار ہے لیکن وہ شہر سے کافی دور واقع ہونے کی وجہ سے متاثرین بودھن شہر کے بلدی حلقہ نمبر 6میں واقع این ایف سی کی فاضل اراضی چاہتے ہیں لیکن متعلقہ وارڈ کے رکن بلدیہ بہر قیمت اس اراضی پر انیسہ نگر کے متاثرین کو آباد ہونے کی اجازت نہیں دے رہے ہیں۔ ذرائع کے مطابق متعلقہ رکن بلدیہ اس فاضل اراضی پر پہلے سے ہی 85پلاٹس تیار کرتے ہوئے اپنی برادری کے افراد میں تقسیم کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT