Wednesday , September 20 2017
Home / ہندوستان / بچوں کو عظیم تر حقوق کیلئے دستوری ترمیم کی سفارش بچپن کے ابتدائی حصے میں معقول نگہداشت کو یقینی بنانے پر زور

بچوں کو عظیم تر حقوق کیلئے دستوری ترمیم کی سفارش بچپن کے ابتدائی حصے میں معقول نگہداشت کو یقینی بنانے پر زور

نئی دہلی۔ 27 اگست (سیاست ڈاٹ کام) لا کمیشن آف انڈیا نے آج دستور میں ترمیم کی سفارش کی تاکہ یقینی ہوجائے کہ 6 سال کی عمر سے کم والے بچوں کو غفلت ، نقصان اور استحصال کی تمام شکلوں سے محفوظ رکھا جاسکے۔اس کمیشن نے یہ سفارش بھی کی کہ ان بچوں کیلئے بنیادی نگہداشت کا حق محفوظ کیا جائے۔ جبکہ یہ نشاندہی کی کہ ہندوستان میں موجودہ قانونی چوکھٹا کم عمر بچوں کے حقوق پر معقول زور نہیں دیتا۔ کمیشن نے کہا کہ بچپن کا ابتدائی حصہ وہ مرحلہ ہوتا ہے جب بچے استحصال یا کسی قسم کے ضرر کے معاملے میں بہت مخدوش ہوتے ہیں اور ان پر مناسب توجہ نہیں دی گئی تو ان کی صحت اور نشوونما متاثر ہوتی ہے۔ کمیشن نے آج وزارتِ قانون کی پیش کردہ اپنی رپورٹ میں یہ بھی سفارش کی کہ قانون حق تعلیم ، قانون میٹرنٹی بنیفٹ میں بھی ترمیم کی جائے اور ایسی قانونی اتھاریٹی تشکیل دی جائے جو بچوں کی ابتدائی عمر میں مناسب نگہداشت اور ان کے فروغ کو یقینی بنائے۔ یہ کمیشن جس کی میعاد 31 اگست کو ختم ہورہی ہے ، اس کی رپورٹ مختلف گوشوں کی جانب سے کی گئی اپیلوں کا نتیجہ ہے۔ کمیشن نے کہا کہ ہندوستان میں بچوں کی حفاظت کا انحصار مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی پالیسیوں پر ہوتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT