Saturday , July 22 2017
Home / شہر کی خبریں / بچہ مزدوری کے خاتمہ کے لیے محکمہ پولیس اور لیبر کے ذریعہ اقدامات

بچہ مزدوری کے خاتمہ کے لیے محکمہ پولیس اور لیبر کے ذریعہ اقدامات

بچوں کو آزاد کروانے کی کارروائی ، باز آبادکاری ، وزیر داخلہ نرسمہا ریڈی کا بیان
حیدرآباد۔16مارچ (سیاست نیوز) ریاست میں بچہ مزدوری کے خاتمہ کیلئے حکومت محکمہ پولیس اور لیبر کے ذریعہ اقدامات کررہی اور اچانک دھاوے کرتے ہوئے بچہ مزدوروں کو رہا کروایا جا رہا اور ان کی باز آبادکاری کے اقدمات کئے جا رہے ہیں۔ ریاستی وزیر داخلہ مسٹر این نرسمہا ریڈی نے تلنگانہ قانون ساز کونسل میں رکن قانون ساز کونسل ڈاکٹر پی راجیشور راؤ کے سوال کا جواب دیتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں بعض تجارتی اور صنعتی اداروں میں بچہ مزدوری کو فروغ دیئے جانے کی اطلاعات کے بعد ’آپریشن اسمائل ‘ شروع کیا گیا اوراس آپریشن کے دوران یکم اپریل 2016سے 31ڈسمبر 2016کے دوران 313 مقامات پر دھاوے کرتے ہوئے 202بچہ مزدوروں کو رہا کرواتے ہوئے ان کی بازآبادکاری کے اقدامات کئے گئے۔مسٹر این نرسمہا ریڈی نے بتایا کہ کم عمر بچوں سے مزدوری کروانے والے انتظامیہ اور مالکین کے خلاف چائلڈ لیبر قوانین کی خلاف ورزی کے مقدمات درج کئے گئے ہیں۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ ’آپریشن اسمائلIII‘ کے تحت یکم جنوری تا 31جنوری 2017 خصوصی مہم چلائی گئی اور اس مہم کے دوران محکمہ پولیس اور محکمہ لیبر کے عہدیداروں نے ریاست کے مختلف مقامات پر دھاوے کرتے ہوئے 575بچہ مزدوروں کو رہا کروایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ خطرناک اور آلودہ مقامات و صنعتوں میں کام کر رہے بچوں کو رہا کرواتے ہوئے انہیں سرکاری ہاسٹلس اور نیشنل چائلڈ لیبر پراجکٹ ٹریننگ سنٹر کے تحت چلائے جانے والے اداروں میں داخل کروایا گیا تاکہ ان کی بازآبادکاری کو ممکن بنایا جا سکے۔ریاست میں جاری بچہ مزدوری کے خاتمہ کے خلاف مہم کے متعلق رکن قانون ساز کونسل ڈاکٹر پی راجیشور ریڈی نے استفسار کیا تھا کہ آیا یہ بات درست ہے کہ ریاست میں بچہ مزدوری کے واقعات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور اس کے لئے حکومت کی جانب سے خصوصی مہم چلائی جا رہی ہے۔ انہوں نے مزید جاننا چاہا کہ بچہ مزدوری قوانین کی خلاف ورزی کے مرتکب افراد کے لیے کیا کاروائی کی جا رہی ہے جس پر وزیر داخلہ مسٹر این نرسمہا ریڈی نے بتایا کہ ترمیم شدہ قوانین کی دفعہ 3کے تحت انتظامیہ اور 20 کے تحت تاجرین کے خلاف کاروائی کی جا رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ ریاستی حکومت بچہ مزدوری کے خاتمہ کیلئے متعدد اقدامات کر رہی ہے جس میں اچانک دھاوے کرتے ہوئے بچہ مزدوری کروانے والوں کے خلاف سخت کاروائی بھی شامل ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT