Monday , July 24 2017
Home / سیاسیات / بڈگام میں 38 بوتھس پر آج مکرر رائے دہی علحدگی پسندوں کی جانب سے بند کا اعلان

بڈگام میں 38 بوتھس پر آج مکرر رائے دہی علحدگی پسندوں کی جانب سے بند کا اعلان

سرینگر۔ 12 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) الیکشن کمیشن نے سرینگر لوک سبھا حلقہ کے 38 پولنگ بوتھس پر مکرر رائے دہی کا حکم دیا ہے اور یہ تمام ضلع بڈگام میں واقع ہیں جو اتوار کو ہوئی رائے دہی کے دوران بدترین تشدد کا شکار ہوا تھا۔ کل مکرر رائے دہی کا انعقاد انتظامیہ کیلئے ایک بڑا چیلنج بن گیا ہے اور سیکوریٹی کے غیرمعمولی انتظامات کئے جارہے ہیں۔ بڈگام ٹاؤن اور اطراف کے علاقوں میں خوف و دہشت کا ماحول پایا جاتا ہے۔ اتوار کو ہوئی رائے دہی میں یہاں سب سے زیادہ تشدد دیکھا گیا جس میں 8 افراد ہلاک اور دیگر کئی زخمی ہوگئے تھے۔ 7 اموات صرف ضلع بڈگام میں ہوئی تھی۔ الیکشن کمیشن کے عہدیداروں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ 38 پولنگ بوتھس پر سیکوریٹی اور ویڈیو گرافی کے مؤثر انتظامات کئے جائیں گے۔ چیف الیکٹورل آفیسر جموں و کشمیر شنت مانو نے آج اعلیٰ سطحی اجلاس میں انتظامات کا جائزہ لیا۔ اس دوران علحدگی پسندوں نے سرینگر لوک سبھا حلقہ کے ضلع بڈگام میں کل بند کا اعلان کیا ہے۔ سید علی شاہ گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور یٰسین ملک نے ایک مشترکہ بیان جاری کرتے ہوئے 13 اپریل کو جن علاقوں میں مکرر رائے دہی ہوگی، بند کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ مکرر رائے دہی کا مقصد بوگس رائے دہی اور دھاندلیوں کے ذریعہ رائے دہی کے فیصد میں اضافہ کرنا ہے۔ اتوار کو پرتشدد واقعات کے دوران سرینگر لوک سبھا نشست کیلئے صرف 7.14 فیصد رائے دہی ریکارڈ کی گئی تھی۔ بڈگام کے 38 پولنگ بوتھس پر صبح 7 بجے رائے دہی کا آغاز ہوگا جو 4 بجے شام تک جاری رہے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT