Wednesday , October 18 2017
Home / دنیا / بڑی کرنسی نوٹوں کا چلن بند کرنے پر امریکی ماہرین نے ہندوستان کی ستائش کی

بڑی کرنسی نوٹوں کا چلن بند کرنے پر امریکی ماہرین نے ہندوستان کی ستائش کی

واشنگٹن ۔ 10 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں معاشی ماہرین نے حکومت ہند کی جانب سے 500 اور 1000 روپئے کے نوٹوں کا چلن بند کردینے کو ایک انتہائی جرأتمندانہ قدم سے تعبیر کیا تاہم انسداد بدعنوانی اور کالے دھن کے عفریت سے چھٹکارہ پانے کیلئے اٹھائے گئے اس جرأتمندانہ قدم کی کامیابی اس کے طریقہ اطلاق پر منحصر ہے۔ راس اسکول آف بزنس میں مارکٹنگ کے پروفیسر پونیت منچندا نے کہا کہ یہ ایک حیرت انگیز اور انتہاء پسند پالیسی ہے جو دراصل ہندوستان میں بدعنوانی کی روک تھام  کیلئے لاگو کی گئی ہے۔ اس کا مثبت پہلو یہ ہیکہ یہ ملک میں بدعنوانی کے خاتمہ کی نیت سے لاگو کی گئی ہے جبکہ اس کا منفی پہلو یہ ہیکہ اس کے ذریعہ کم درجہ اور درمیانی درجہ کی بدعنوانیوں کو نشانہ بنایا گیا ہے یعنی تالاب کی بڑی مچھلیوں کے خلاف کچھ نہیں کیا گیا ہے کیونکہ اعلیٰ سطحی بدعنوانیاں ’’نقدی‘‘ کی محتاج نہیں ہوتیں۔ انہوں نے کہاکہ رئیل اسٹیٹ مارکٹ میں لیکوٹیڈیٹی کی کمی کی وجہ سے کوئی منفی اثرات مرتب نہیں ہوں گے۔ لہٰذا یہ کہنا دشوار ہوگا کہ اس کے مختصر مدتی اثرات مرتب ہوں گے۔ تاہم درمیانی مدت کیلئے اس کے اثرات یقینی طور پر مرتب ہوں گے۔ مسٹر منچندا نے کہا کہ اگر حکومت ہند اس پالیسی کے زیادہ سے زیادہ مثبت اثرات دیکھنے کے خواہاں ہے تو پھر بدعنوانیوں سے نمٹنے دیگر پالیسیوں کا بھی وقتاً فوقتاً اعلان کرنا چاہئے۔ اسی طرح یونیورسٹی آف مشی گن لاء اسکول کے پروفیسر وکرمادتیہ کھنہ، راس اسکول آف بزنس کے ایسوسی ایٹ ڈین ایم ایس کرشنن نے بھی حکومت ہند کے ذریعہ بدعنوانیوں سے نمٹنے 500 اور 1000 کے کرنسی نوٹوں کے چلن کو اچانک بند کردینے کے اقدام کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT