Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / بڑے گوشت پر امتناع کے تنازعہ سے بیشتر وقت ضائع

بڑے گوشت پر امتناع کے تنازعہ سے بیشتر وقت ضائع

جموں و کشمیراسمبلی کے موسم خزاں اجلاس پر بیف کے مسئلہ کے سائے
سرینگر ۔11اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) جموں وکشمیر اسمبلی کے 8روزہ خزاں اجلاس کا بیشتر وقت شوروغل اور بدنظمی کی نذر ہوگیا جو ریاست میں بڑے گوشت پر امتناع کے سلسلہ میں تھا ۔ اسمبلی میں پست ترین سطح کی سیاست دیکھی گئی جب کہ اس کی 64سالہ تاریخ میں تین بی جے پی ارکان اسمبلی نے آزاد رکن اسمبلی لان گیٹ شیخ عبدالرشید کو ایوان میں مارپیٹ کی ۔ کیونکہ انہوں نے ’’ بیف پارٹی ‘‘ منعقد کی تھی ۔ پی ڈی پی اور بی جے پی جو مخلوط حکومت کے شرکاء ہیں بڑے گوشت پر امتناع کے سلسلہ میں کوئی واضح موقف نہیں رکھتے ‘ جب کہ کانگریس نے بھی اس سلسلہ میں خاموشی اختیار کر رکھی ہے لیکن اہم اپوزیشن نیشنل کانفرنس اور اپوزیشن کے دیگر دو ارکان اسمبلی نے کہا کہ تین خانگی ارکان کے مسودہ قانون جن کا مقصد رنبیر کمیٹی قانون میں ترمیم تھا ۔ ریاست میں ذبیحہ گاؤ کے سلسلہ میں تعصب کا رویہ اختیار کئے بغیر اس ترمیم پر غور کیا جانا چاہیئے ۔ ایوان کی کارروائی پہلے پانچ دن تک قطعی نہیں چل سکی کیونکہ اپوزیشن ارکان نے کارروائی کو چلنے نہیں دیا ۔ کئی بار تحریکات التواء مختلف مسائل بشمول بڑے گوشت پر امتناع کے تنازعہ کے سلسلہ میں پیش کی گئیں ‘ واک آؤٹ اور شوروغل کے مناظر دیکھے گئے ۔ اپوزیشن ارکان بار بار ایوان کے وسط میں جمع ہوتے رہے اور چھوٹی سی اشتعال انگیزی پر بھی اسی قسم کے مناظر پہلے پانچ دن تک دیکھے جاتے رہے ۔
آخری دو دنوں میں زیادہ تر کام انجام پایا ۔ بڑے گوشت پر امتناع کے مسودہ قانون جمعرات کے دن ناکارہ قرار پائے کیونکہ ان پر غور کیلئے اور رسمی کارروائی کیلئے وقت کی قلت تھی ۔ اس موقع پر جب کہ زبردست کام زیر التواء تھا ۔ ان مسودہ قانون پر غور نہیں کیا جاسکتا تھا ۔ اسمبلی میں ہونے والے کام کی تفصیلات کا انکشاف کرتے ہوئے اسپیکر رویندر گپتا نے کہا کہ اسمبلی کی سکریٹریٹ کو 570 سوالات وصول ہوئے تھے جن میں سے 524کو مباحثہ کیلئے فہرست میں شامل کیا گیا ۔47سوالات اجلاس کے دوران کئے گئے ۔ ضمنی سوالات ایوان اسمبلی میں اٹھائے گئے ۔ 148 مسائل وقفہ صفر کے دوران اٹھائے گئے ۔ سرکاری مسودہ قانون منظور کئے گئے ‘اسپیکر نے کہا کہ ایک خانگی رکن کا مسودہ قانون غور کیلئے لیا گیا تھالیکن مسترد کردیا گیا ۔

TOPPOPULARRECENT