Friday , June 23 2017
Home / Top Stories / بھوپال کے قریب بھی کاشتکاروں کا احتجاج، آتشزنی اور سنگباری

بھوپال کے قریب بھی کاشتکاروں کا احتجاج، آتشزنی اور سنگباری

مندسور اور پپلیا منڈی میں کرفیو میں نرمی، یوپی اور ٹاملناڈو میں بھی کاشتکاروں کے احتجاج ، سیاسی پارٹیوں کا ردعمل

بھوپال 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) مدھیہ پردیش کے دارالحکومت بھوپال کے قریب تک آج کاشتکاروں کا احتجاج پہونچ گیا جبکہ فنڈا کے علاقہ میں کاشتکاروں کی جانب سے آتشزنی اور سنگباری کے واقعات پیش آئے۔ پولیس نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھی چارج کیا اور کم از کم 27 افراد گرفتار کرلئے گئے۔ مندسور سے موصولہ اطلاع کے بموجب آج شہر مندسور اور پپلیا منڈی میں دن بھر کے لئے کرفیو میں نرمی پیدا کی گئی لیکن احتیاطی اقدام کے طور پر عام آدمی پارٹی کی ٹیم کو مندسور میں داخل ہونے سے روک دیا گیا۔ دریں اثناء ایک 26 سالہ کاشتکار دیہات بڑاوان میں مبینہ طور پر پولیس ملازمین کی زدوکوب سے ہلاک ہوگیا۔ لکھنؤ سے موصولہ اطلاع کے بموجب یوپی کے کسانوں نے بھی خاص طور پر نیشکر اور آلو کے کاشتکار بھی بروقت اقدام کے طور پر کاشتکاروں کے احتجاج میں شامل ہوگئے اور امکان ہے کہ اُن کا احتجاج بھی سڑکوں پر آجائے گا۔ چینائی سے موصولہ اطلاع کے بموجب آیاکنو کی زیرقیادت ٹاملناڈو کے کاشتکاروں نے غیرمعینہ مدت کا احتجاج شروع کردیا ہے جبکہ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے ٹاملناڈو کے احتجاج کو کانگریس کے اشارے پر کیا ہوا احتجاج قرار دیا۔ مندسور میں سپرنٹنڈنٹ پولیس منوج کمار سنگھ نے کہاکہ 10 بجے دن تا 6 بجے شام کرفیو میں نرمی کا فیصلہ عہدیداروں کی جانب سے کیا گیا ہے کیوں کہ صورتحال بہتر ہوگئی ہے تاہم اِس اندیشے کے تحت کہ سیاستدانوں کی مداخلت سے حالات دوبارہ ابتر ہوسکتے ہیں، عام آدمی پارٹی کی ٹیم کو مندسور میں داخل ہونے سے روک دیا گیا۔ کلکٹر مندسور اور ایس پی منوج کمار سنگھ نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ امتناعی احکام ہنوز پورے مندسور میں ہنوز جاری رہیں گے۔ یوپی میں مدھیہ پردیش کے کاشتکاروں کے احتجاج سے تحریک پاکر بھارتیہ کسان یونین نے دھمکی دی ہے کہ دودھ اور ترکاریوں کی سربراہی اتوار کے دن سے شہروں کے لئے روک دی جائے گی اگر مندسور میں پولیس فائرنگ کے بارے میں درج ایف آئی آر کی سی بی آئی تحقیقات کا اُن کا مطالبہ قبول نہ کیا جائے۔ ٹاملناڈو میں بھی مدھیہ پردیش اور مہاراشٹرا کے کسانوں کے احتجاج سے تحریک پاکر غیر معینہ مدت کے احتجاج کا اعلان کیا گیا ہے۔ اُنھوں نے جو منشور مطالبات پیش کیا ہے اِس میں جامع خشک سالی کے لئے راحت پیاکیج کا اعلان بھی شامل ہے۔
کاشتکاروں کے ساتھ انصاف کے نعرے لگاتے ہوئے احتجاجیوں نے اپنا آغاز مدھیہ پردیش میں پولیس فائرنگ سے ہلاک ہوجانے والے کسانوں کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ ملک گیر سطح پر کاشتکاروں کو کئی مسائل کا سامنا ہے اِس لئے حکومت کو چاہئے کہ اُن کے مسائل کا ہمدردانہ جائزہ لے اور مطالبات تسلیم کرلے۔ حکومت نے فوری طور پر قحط سے متاثرہ افراد میں راحت رسانی کے لئے مدد کی تقسیم کا آغاز کردیا ہے۔ علاوہ ازیں ہر زمرہ کے کاشتکاروں کے مطالبات پر بھی غور کا آغاز ہوگیا ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT