Friday , July 28 2017
Home / ہندوستان / ’بھیم آرمی ‘کے بانی چندر شیکھر خودسپردگی کیلئے تیار

’بھیم آرمی ‘کے بانی چندر شیکھر خودسپردگی کیلئے تیار

37 بے قصور دلتوں کو رہا کرنے کی شرط ، آدتیہ ناتھ حکومت کا پولیس و انتظامیہ پر کنٹرول نہیں
نئی دہلی۔ 6 جون (سیاست ڈاٹ کام) بھیم آرمی کے بانی چندرشیکھر نے جو گزشتہ ماہ اُترپردیش کے سہارنپور میں ذات پات پر مبنی تشدد کے بعد سے گرفتاری سے بچ رہے ہیں، آج کہا کہ وہ خودسپردگی کیلئے تیار ہیں بشرطیکہ 37 بے قصور دلتوں کو ضمانت پر رہا کیا جائے۔ انہوں نے جالندھر سے تقریباً 50 کیلومیٹر دور خفیہ مقام سے پی ٹی آئی۔ بھاشا کو بتایا کہ اترپردیش پولیس حقیقی مجرمین کو گرفتار نہیں کررہی ہے بلکہ بے قصور افراد کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔ 30 سالہ چندر شیکھر نے الزام عائد کیا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کے بحیثیت چیف منسٹر جائزہ لینے کے بعد سے دلت طبقہ پر مظالم کے واقعات میں کافی اضافہ ہوگیا ہے۔ ان کا یہ احساس ہے کہ اترپردیش حکومت، دلتوں کے مسائل سے نمٹنے میں ناکام رہی ہے۔ چیف منسٹر کا پولیس اور انتظامیہ پر کنٹرول نہیں ہے۔ دلتوں کیخلاف گزشتہ ڈھائی ماہ کے دوران مظالم کے جو واقعات پیش آئے ہیں، اگر ان کا گزشتہ ایک سال سے موازنہ کیا جائے تو اندازہ کیا جاسکتا ہے کہ ان واقعات میں کس قدر اضافہ ہوا ہے۔ بھیم آرمی 5 مئی کو اچانک اس وقت نمودار ہوئی جب سہارنپور کے شبیر پور دیہاتوں میں دلتوں اور ٹھاکروں کے مابین جھڑپیں ہوئیں ان میں ایک ہلاک اور کئی زخمی ہوگئے تھے۔ چندر شیکھر ان اہم افراد میں سے ایک ہے جن کی ذات پات پر مبنی تشدد کے سلسلے میں پولیس کو تلاش ہے۔ اترپردیش پولیس نے چندر شیکھر کا پتہ بتانے والوں کو کل 12,000 روپئے انعام دینے کا اعلان کیا ہے۔ ایڈوکیٹ سے سماجی کارکن بننے
والے چندر شیکھر نے کہا کہ سہارنپور تشدد کے حقیقی خاطیوں کو گرفتار کرنے کے بجائے پولیس بے قصور افراد کو گرفتار کررہی ہے

اور انہیں جیل کی سلاخوں کے پیچھے ڈالا جارہا ہے۔ اس کی وجہ سے دلتوں میں برہمی پیدا ہورہی ہے۔ جب ان سے پوچھا گیا کہ کیا وہ خودسپردگی اختیار کرلیں گے، انہوں نے دعویٰ کیا کہ پہلے وہ دہلی پولیس اور مجسٹریٹ سے رجوع ہوئے تھے لیکن انہوں نے گرفتار کرنے سے انکار کردیا۔ اب وہ چاہتے ہیں کہ 37 بے قصور دلتوں کو جو جیل میں ہیں، ضمانت پر رہا کیا جائے، اس کے بعد ہی وہ خودسپردگی اختیار کریں گے۔ شبیر پور جھڑپ کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ دلتوں کو دھمکی دی گئی تھی کہ ٹھاکروں کے نکالے جانے والے جلوس میں اگر مداخلت کی جائے تو انہیں گولی مار دی جائے گی۔ پولیس کو مطلع کرنے پر اس نے کوئی کارروائی نہیں کی۔
چارہ اسکام مقدمہ : لالو پرساد ، جگناتھ مشرا عدالت میں پیش
پٹنہ۔6 جون (سیاست ڈاٹ کام) آر جے ڈی صدر لالو پرساد یادو کئی کروڑ کے چارہ اسکام مقدمہ میں آج خصوصی سی بی آئی عدالت میں پیش ہوئے۔ بہار کے ایک اور سابق چیف منسٹر جگناتھ مشرا اور دیگر ملزمین بھی سی بی آئی جج دیوراج ترپاٹھی کے روبرو پیش ہوئے۔ یہ مقدمہ بھاگلپور ٹریژری سے 1996ء میں دھوکہ دہی کے ذریعہ 40 لاکھ روپئے کی رقم سے دستبرداری سے متعلق ہے۔ عدالت نے ملزمین کو شخصی طور پر حاضر ہونے کیلئے سمن جاری کیا تھا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT